1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

نسلی امتیاز کے خلاف کانفرنس اختتام پذیر

جنیوا میں ہونے والی اقوام متحدہ کی نسل پرستی کے خلاف کانفرنس اپنے اختتام کو پہنچ گئی ہے۔ انسانی حقوق کے لئے سرگرم افراد کے خیال میں یہ کانفرنس کامیاب رہی۔

default

Mahmoud Ahmadinejad Antirassismus Konferenz in Genf

کانفرنس میں ایرانی صدر احمدی نژاد کی اسرائیل مخالف تقریر کو کڑی تنقید کا سامنا کرنا پڑا


ان ماہرین کا خیال ہے کہ اس کانفرنس سے نسل پرستی اورامتیازی سلوک کی روک تھام کے حوالے سے مزید پیش رفت ہوئی ہے جبکہ اس کانفرنس کا کئی ملکوں نے بائیکاٹ بھی کیا۔

اس ہفتے کے آغاز سے 182 ممالک کے نمائندوں نے اس بات پربحث کی کہ آٹھ سال قبل نسل پرستی کے موضوع پر ہونے والی پہلی کانفرنس کے اختتامی اعلامیے پر کب اور کیسے عمل درآمد کیا جائے۔ اقوام متحدہ کے زیراہتمام ہونے والی اس کانفرنس میں آغاز سے اختتام تک مشرقی وسطی کا موضو ع چھایا رہا۔ دس ممالک جن میں امریکہ، اسرائیل اور جرمنی بھی شامل ہیں کانفرنس میں شرکت کرنے سے اس وجہ سے انکار کردیا تھا کہ اس کانفرنس کو اسرائیل کے خلاف پروپگینڈے کے طور پر استعمال کیا جا سکتا ہے۔

Antirassismus Konferenz in Genf

اجلاس میں امریکہ کی خالی نشست


ایرانی صدر محمود احمد نژاد نے ان ممالک کے ان خدشات کو درست ثات کرتے ہوئے کانفرنس کے آغاز میں اپنی تقریر میں اسرائیل پرکڑی تنقید کی۔ جرمنی میں انسانی حقوق کے ادارے سے منسلک Petra Follmar Otto نے اس حوالے سے کہا کہ پوری کانفرنس میں ایرانی صدر وہ واحد شخص تھے جنہں نے اسرائیل پر تنقید کی ۔ اس وجہ سے جرمنی کا کانفرنس میں شرکت نہ کرنا ایک غلطی تھا۔

شرکاء اس بات پر خوش نظر آ رہے تھے کہ کانفرنس کا اختتام ایک اچھے طریقے سے ہوا۔ کیونکہ کانفرنس کے اختتامی اعلامیے کے مسودے پر کئی ممالک کو اعتراض تھا۔ جس میں تبدیلی کے بعد کانفرنس کی کارروائی میں کوئی بد نظمی نہیں ہوئی۔ اقوام متحدہ کے خصوصی نمائندہ برائے نسل امتیاز Githu Muigai نے بتایا کہ کانفرنس اور کس لحاظ سے کامیاب رہی۔

کیا اب نسل پررستی کے خلاف ایک اور کانفرنس منعقد ہو گی ۔ اس بارے میں کچھ نہیں کہا جا سکتا۔ تا ہم ضرورت اس بات کی ہے کہ ڈربن اورجنیوا میں طے پانے والے فیصلوں پر کام کیا جائے۔