1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

نرگس طوفان کے باوجود میانمار میں ریفرنڈم؟

میانمار کی فوجی حکومت کی جانب سے ینگون فضائی اڈے پر بین الاقوامی امدادی سامان کو اپنے قبضے میں لینے کے باوجود اقوام متحدہ کے پروگرام برائے خوراک نے متاثرین کے لئے امداد دوبارہ میانمار روانہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

default

نرگس طوفان سے متاثرہ افراد کے لئے اقوام متحدہ کے ادارے برائے خوراک کی امداد

دوسری جانب طوفان کی تباہ کاریوں کے باوجود میانمار حکومت ہفتے کے روز پہلے سے طے شدہ پروگرام کے تحت ملک میں ریفرنڈم کرانے کے اپنے فیصلے پر قائم ہے۔

Volkabstimmung in Myanmar

میانمار میں دس مئی کو ہونے والے ریفرنڈم کے احتجاج میں تھائی لینڈ کے سفارتخانے کے سامنبے مُظاہرے

فوجی حکومت نے جمعہ کے روز اپنے شہریوں پر زور دیا کہ انہیں حب الوطنی کے جزبے کے تحت ریفرنڈم میں بھرپور شرکت کرنی چاہیئے۔ایک ٹیلی ویژن پیغام میں لوگوں سے کہا گیا کہ وہ فوج کی طرف سے تیار کردہ ملکی آئین کے لئے کرائے جانے والے اس ریفرنڈم میں حصہ لیں۔مذکورہ پیغام میں تاہم نرگس طوفان کی تباہ کاریوں کا کوئی تذکرہ نہیں تھا۔

ینگون میں بسنے والے پچاس لاکھ شہریوں کو اس بات پر بڑا تعجب ہوا کہ فوجی حکومت قیامت خیز نرگس طوفان کے باوجود ریفرنڈم کرانا چاہتی ہے۔تاہم جنتا نے طوفان سے بری طرح متاثرہ جنوبی علاقوں میں یہ ریفرنڈم آئیندہ دو ہفتوں تک کے لئے ملتوی کردیا ہے۔

مجوزہ ریفرنڈم سے قبل میانمار میں سن انیس سو نوے میں انتخابات منعقد ہوئے تھے جن میں نیشنل لیگ فار ڈیموکریسی نے زبردست کامیابی حاصل کرکے فوجی جرنیلوں کو شکست دی تھی۔

میانمار حکومت کے مخالفین کے خیال میں فوجی جرنیل ریفرنڈم سے قبل ملک میں غیر ملکی امدادی کارکنوں کو داخل ہونے کی اجازت دینے کے حق میں نہیں ہیں۔

جمعہ کے روز خوراک کے عالمی پروگرام‘ نے خوراک لے جانے والے اپنے دو امدادی طیاروں کو میانمار روانہ کیا تھا لیکن فوجی حکومت نے ینگون ائیر پورٹ پر امدادی سامان کو اپنے قبضے میں کرلیا۔

ورلڈ فوڈ پروگرام نے اب یہ فیصلہ کیا ہے کہ وہ اپنے پروگرام کے عین مطابق مذید دو امدادی طیاروں کو ہفتےکے روز میانمار روانہ کرے گا۔ورلڈ فوڈ پروگرام کا یہ بھی کہنا ہے کہ جمعہ کو بھیجے گئے امدادی سامان کی تقسیم کے حوالے سے میانمار حکومت سے مذاکرات جاری ہیں۔ اس فیصلے سے قبل اقوام متحدہ کے پروگرام برائے خوراک نے اپنے امدادی طیاروں کو روکنے کی بات کی تھی۔

USA Verteidigungsminister Robert Gates

امریکی وزیر دفاع رابرٹ گیٹس

ادھرامریکی وزیر دفاع رابرٹ گیٹس نے میانمار میں طوفان سے متاثرہ افراد کی امداد اور راحت کے لئے اپنی حکومت کی جانب سے بھر پور تعاون کا یقین دلایا۔گیٹس نے کہا کہ ناگہانی آفات کے موقعوں پر صحیح وقت پر صحیح فیصلے کرنے سے بہت بڑا فرق پڑتا ہے اور فائدہ بھی ہوتا ہے۔