1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

نائجرڈیلٹا کے باغیوں کے لئے عام معافی کا آغاز

افریقی ملک نائجیریا میں نائجر ڈیلٹا کے باغیوں کے لئے عام معافی کے اعلان پر عمل درآمد شروع ہو گیا ہے۔ اس کا مقصد وہاں تیل کی صنعت کو مفلوج بنا دینے والی اس مسلح تحریک کا خاتمہ اور بدحال صنعت کی بحالی ہے۔

default

نائجیر ڈیلٹا کے باغی

نائجر ڈیلٹا کے باغیوں کے لئے اس معافی پر عمل درآمد کا آغاز کل جمعرات سے ہوا، جس کے لئے ایک باقاعدہ طریقہ کار وضح کیا گیا ہے۔ آبوجہ میں قومی سطح پر کام کرنے والی ایمنسٹی کمیٹی کے ایک ترجمان نے گزشتہ رات بتایا کہ اس عمل کے دوران نائجر ڈیلٹا کے حقوق کی تحریک نامی عسکریت پسند تنظیم MEND کے ارکان کو ہتھیار پھینکنے کے لئے دو ماہ کی مہلت دی گئی ہے۔

اس مہم کے دوران باغی کسی بھی قریبی سکریننگ سینٹر میں مقامی اہلکاروں کو اپنے ہتھیار جمع کرا سکیں گے۔ پھر انہیں انفرادی طور پر اپنی مسلح کارروائیوں کے خاتمے کا حلف اٹھانا ہوگا، جس کے بعد انہیں ان کے جرائم کی، ملکی صدر کی طرف سے غیر مشروط معافی کی سند جاری کی جائے گی۔

Staatsbesuch Köhler Nigeria Abuja

نائجیریا کے صدرعُمارُو یار ادوا جرمن صدر کوئلر کے ہمراہ آبوجہ میں، فائل فوٹو

چھ اگست کو شروع ہونے والی باغیوں کے لئے معافی کی یہ محدود مدت چار اکتوبر کو پوری ہو جائے گی۔ اس کے لئے ملکی ایمنسٹی کمیٹی نے نائجیریا کی تیل پیدا کرنے والی نو وفاقی ریاستوں میں بہت سے سکریننگ سینٹر قائم کئے ہیں، جہاں MEND کے باغی ہتھیار پھینکنے، معافی اور دوبارہ سماجی انضمام کے لئے اپنا اندراج کروا سکتے ہیں۔

عسکریت پسندوں کو ہتھیار پھینکنے پر آمادہ کرنے کے لئے شروع کئے گئے اس پروگرام کے آغاز کے چند ہی گھنٹے بعد نائجیریا کے صدر عُمارُو یارادوا نے کہا کہ معافی کے اس پروگرام پر عمل درآمد کے سلسلے میں باغیوں کے رہنماؤں کی طرف سے سامنے آنے والا فوری رد عمل بڑا حوصلہ افزاء ہے، جو اس امر کا ثبوت ہے کہ ملک میں قیام امن کے لئے حکومت نے صحیح سمت میں درست قدم اٹھایا ہے۔

Öl Bohrplattform im Niger Delta

نائجیر ڈیلٹا میں تیل کی تلاش کا عمل

آبوجہ میں ایمنسٹی کمیٹی کے ترجمان کوری پامو آگاری کے بقول نائجر ڈیلٹا کے باغیوں کو اپنے سربراہ ہنری اوکاہ کی پیروی کرنا چاہیے، جو پکڑے جانےکے بعد حکومت کی قید میں تھے، مگر جنہوں نے جولائی میں معافی کی پیشکش قبول کرتے ہوئے اپنی مسلح جدوجہد ترک کر دینے کا فیصلہ کیا تھا۔

Mitglied der Rebellengruppe MEND in Nigeria

MEND کا ایک باغی راکٹ لانچر سنبھالے ہوئے

نائجیریئن حکام کے مطابق، ہنری اوکاہ کو ان کے خلاف بغاوت سے متعلق تمام الزامات ختم کرتے ہوئے گزشتہ ماہ رہا کردیا گیا تھا، وہ اب ایک آزاد شہری ہیں اور MEND کے باقی ماندہ باغیوں کو بھی معافی کی حکومتی پیشکش قبول کرتے ہوئے اپنے دوبارہ سماجی انضمام کو یقینی بنانا چاہیے۔

نائجیریا میں نائجر ڈیلٹا کے حقوق کی تحریک کے تیل کی تنصیبات پر کئے جانے والے مسلح حملے اتنے شدید ہو چکے ہیں کہ ان کی وجہ سے تیل کی یومیہ ملکی پیداوار میں لاکھوں بیرل کی کمی ہو چکی ہے۔ اس تحریک کے مسلح ارکان کے ہاتھوں اغواء ہونے والے تیل کی صنعت کے کارکنوں کی مجموعی تعداد بھی سینکڑوں میں بنتی ہے۔

اس کے علاوہ یہی مسلح جدوجہد ملکی معیشت کے لئے اتنی نقصان دہ ثابت ہوئی ہے کہ گزشتہ برس نائجیریا کو تیل کی صنعت سے ہونے والی آمدنی کی ماہانہ اوسط اگر 2.2 بلین ڈالر رہی تھی تو سال رواں کے دوران اب تک یہی اوسط واضح طور پر کم ہو کر ایک بلین ڈالر کے قریب رہ گئی ہے۔