1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

نئی فرانسیسی کابینہ میں خواتین وزراء کی تعداد نصف

فرانس کے نئے صدر نے منصب صدارت سنبھالنے کے بعد اپنی کابینہ کا اعلان کر دیا ہے۔ انتخابی مہم میں کیے گئے ایک وعدے کے مطابق ان کی نصف کابینہ خواتین پر مشتمل ہے۔

نئے فرانسیسی صدر ایمانوئل ماکروں نے چوبیس گھنٹوں کی تاخیر سے نئی حکومت سازی کے سلسلے میں اپنی کابینہ تشکیل دے دی ہے۔ نئی کابینہ میں قدامت پسندوں اور سوشلسٹوں کے علاوہ اعتدال پسند سیاستدانوں اور چند نئے سیاسی چہروں کو بھی شامل کیا گیا ہے۔

ماکروں کی اس کابینہ میں نصف تعداد خواتین کی ہے۔ صحت، تعلیم اور ٹرانسپورٹ کی وزارتیں نئی شخصیات کو تفویض کی گئی ہیں اور یہ تمام وزراء اپنے اپنے شعبوں کے ماہر ہیں۔

انتالیس سالہ نئے فرانسیسی صدر نے اپنی کابینہ میں غیرسرکاری تنظیموں، کھیل اور فنونِ لطیفہ کے شعبوں سے بھی وزراء کا چناؤ کیا ہے۔ فرانس کی شمشیر زنی میں اولمپک گولڈ میڈل حاصل کرنے والی خاتون ایتھلیٹ لارا فلیس کو وزیر کھیل بنایا گیا ہے۔ ایک ماحول دوست غیر سرکاری تنظیم سے تعلق رکھنے والے نکولا ہولو کو ماحولیات کی وزارت سونپی گئی ہے۔ اسی طرح مشہور فرانسیسی پبلشر فرانسوا نیساں کو وزیر ثقافت مقرر کیا گیا ہے۔

Frankreich Emmanuel Macron Amtseinführung (Getty Images/AFP/F. Mori)

انتالیس سالہ ماکروں فرانس کے سب سے کم عمر صدر بنے ہیں

نیا وزیر خارجہ سابق صدر کے دور میں وزیر دفاع کے فرائض انجام دینے والے ژاں اِیو لدَریاں کو بنایا گیا ہے۔ وہ ماکروں کے پیش رو صدر فرانسوا اولانڈ کی کابینہ کے اہم ترین وزراء میں سے ایک تھے۔

معیشت اور مالیاتی امور کی وزارت قدامت پسند سیاستدان برُونو لَمیئر کو سونپی گئی ہے۔ فرانسیسی شہر لیوں کے میئر جیرالڈ کولم کو وزارتِ داخلہ کا قلمدان سونپا گیا ہے۔ فرانسیسی صدر پہلے ہی ایڈوارڈ فلیپ کو وزیر اعظم نامزد کر چکے ہیں۔ نئی ملکی کابینہ میں مجموعی طور پر بائیس وزراء اور ریاستی سیکرٹری شامل ہیں۔

دوسری جانب صدارتی الیکشن  میں شکست کھا جانے والی انتہائی دائیں بازو کی قدامت پسند امیدوار مارین لی پین کی سیاسی جماعت نیشنل فرنٹ نے نئے صدر کی تشکیل کردہ کابینہ کو مسترد کرتے ہوئے اسے ’ری سائیکل کیے گئے‘ سیاستدانوں کا گروپ قرار دیا ہے۔