1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

نئی دہلی: دونوں میراتھون فائنل کینیا نے جیت لئے

نئی دہلی میں جاری کامن ویلتھ گیمز کے آخری روز کینیا کے کھلاڑیوں نے مردوں اور خواتین دونوں کی میراتھون دوڑوں کے فائنل جیت کر ان مقابلوں میں آسٹریلوی ایتھلیٹس کی برتری کو پہلی مرتبہ نیچا دکھا دیا۔

default

دائیں سے بائیں: آموس ماتوئی، جان کیلائی اور مائیکل شیلی

ان میراتھون مقابلوں کے فائنل میں بھارتی دارالحکومت نئی دہلی کی سڑکوں پر گرمی کی وجہ سے سخت حالات میں اس ریس میں حصہ لیتے ہوئے مردوں کا مقابلہ جان کیلائی نے جیتا۔جان کیلائی کی اس کارکردگی کی وجہ سے کینیا کامن ویلتھ گیمز میں بیس سال بعد مردوں کی میراتھون میں پہلی مرتبہ سونے کا تمغہ جیتنے میں کامیاب رہا۔ انہوں نے مقررہ فاصلہ دو گھنٹے 14 منٹ اور 35 سیکنڈز میں طے کیا۔

Indien Commonwealth Games Delhi 2010

تمغوں کی مجموعی تعداد کے لحاظ سے آسڑیلیا اول نمبر پر رہا

جان کیلائی کے بعد دوسرے نمبر پر کافی پیچھے آسٹریلیا کے مائیکل شیلی رہے جبکہ تیسری پوزیشن کینیا ہی کے ایک اور کھلاڑی آموس ماتوئی نے حاصل کی۔

مردوں کی میراتھون ریس میں کامیابی کے بعد جمعرات کو نئی دہلی میں کینیا کو یہ اعزاز بھی حاصل ہوا کہ اس نے کامن ویلتھ گیمز میں خواتین کی میراتھون کا فائنل بھی جیت لیا۔ کینیا کو یہ اعزاز پہلی مرتبہ ملا ہے کہ دولت مشترکہ کے رکن ملکوں کے کھیلوں کے مقابلوں میں اس کی کسی

اس فائنل میں پہلے نمبر پر آئرین کوسگائی رہیں، جنہوں نے مقررہ فاصلہ دو گھنٹے 34 منٹ اور 32 سیکنڈز میں طے کیا۔ ان کے پیچھے دوسرے نمبر پر کینیا ہی سے تعلق رکھنے والی ان کی ہم وطن آئرین موگاکے رہیں جبکہ آسٹریلیا کی لیزا ویٹ مین تیسری پوزیشن پر رہیں اور یوں کانسی کے تمغے کی حقدار قرار پائیں۔

Commonwealth Games Dorf

کامن ویلتھ گیمز ولیج میں ڈائننگ ہال کا ایک منظر

مردوں اور خواتین کے میراتھون مقابلے جیتنے والے کینیا کے کھلاڑیوں کے باعث یہ بھی ممکن ہو گیا کہ اس مشرقی افریقی ملک نے کم از کم ایتھلیٹکس کے شعبے میں اب تک نئی دہلی میں سب سے آگے رہنے والے ملک آسٹریلیا کو پہلی مرتبہ پیچھے چھوڑ دیا ہے۔

کامن ویلتھ گیمز کے آخری روز ہونے والے میراتھون فائنل مقابلوں کے بعد تک کینیا کے کھلاڑی صرف ایتھلیٹکس میں مجموعی طور پر سونے کے گیارہ، چاندی کے دس اور کانسی کے آٹھ میڈل جیتنے میں کامیاب رہے۔ اس کے برعکس ٹریک اور فیلڈ مقابلوں میں روایتی طور پر ایک بڑی طاقت ثابت ہونے والے ملک آسٹریلیا کے ایتھلیٹس نے مجموعی طور پر سونے کے گیارہ، چاندی کے چھ اور کانسی کے تین تمغے حاصل کئے۔

رپورٹ: عصمت جبیں

ادارت: مقبول ملک

DW.COM

ویب لنکس