1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

میں کپتان بنے رہنا چاہتا ہوں: رکّی پونٹنگ

ایشز سیریز میں شکست کے باوجود آسٹریلوی کپتان رکّی پونٹنگ نے کہا ہے کہ وہ بحیثیت کپتان ہی ٹیم میں رہنا چاہتے ہیں۔

default

پونٹنگ کی کپتانی میں آسٹریلیا کو سن 2005ء اور اب اس سال بھی انگلینڈ کے ہاتھوں ایشز میں ہار کا سامنا کرنا پڑا۔ اس طرح وہ پہلے آسٹریلوی کپتان بن گئے ہیں، جن کی قیادت میں ٹیم کو ایک عشرے کے دوران دو مرتبہ ایشز میں شکست ہوئی ہے۔ لیکن چونتیس سالہ کپتان نے کہا کہ وہ بحیثیت ایک بیٹسمین، کپتان اور ایک قائد اپنی ٹیم کے لئے اب بھی بہت کچھ کر سکتے ہیں۔

Cricket Ashes Cup Englad Australien Juli 2009

پونٹنگ ایشز سیریز سے قبل انگلش ٹیم کے کپتان اینڈریو سٹراؤس کے ساتھ خوشگوار موڈ میں

پونٹنگ نے کہا کہ مائکل کلارک ٹوئنٹی ٹوئنٹی فارمیٹ اور ون ڈے میچوں میں کپتانی کرسکتے ہیں جبکہ ٹیسٹ میچوں میں وہ خود ٹیم کی قیادت کرتے رہنا چاہتے ہیں۔ کرکٹ ماہرین کی رائے میں اب وقت آگیا ہے کہ رکّی پونٹنگ کی جگہ نائب کپتان مائکل کلارک کو ٹیم کی قیادت کی ذمہ داریاں سونپ دینی چاہییں۔

Micheal Clarke

کرکٹ آسٹریلیا نائب کپتان مائیکل کلارک کو ٹیم کی کپتانی سونپنے پر غور کررہی ہے

ٹیسٹ میچوں میں تقریباً چھپن رنز کی اوسط سے گیارہ ہزار سے بھی زائد رنز بنانے والے پونٹنگ کی بیٹنگ کی صلاحیت پر کوئی سوالیہ نشان نہیں ہے، تاہم بحیثیت کپتان ان پر کڑی تنقید کی جا رہی ہے۔ ایشز میں شکست سے پہلے آسٹریلیا کو جنوبی افریقہ کے ہاتھوں بھی ٹیسٹ سیریز میں شکست ہوئی جبکہ بھارت نے بھی ٹیسٹ سیریز میں آسٹریلیا کو شکست دی۔

سن 2002ء میں پونٹنگ ایک روزہ میچوں کے لئے ٹیم کے کپتان مقرر کئے گئے جبکہ اسٹیو وا ٹیسٹ میچو ں میں کپتانی کرتے رہے۔ مائکل کلارک کے علاوہ سائمن کیٹچ کے بارے میں بھی یہ کہا جاتا ہے کہ وہ ٹیم کی کپتانی کے اہل ہیں تاہم کیٹچ خود پونٹنگ کی کپتانی کے حق میں ہیں۔

رپورٹ: گوہر نذیر گیلانی

ادارت: امجد علی