1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

میچ کیوں نہیں دیکھنے دیا، بنگلہ دیشی شائقین فٹبال کا احتجاج

بنگلہ دیش کے دارالحکومت ڈھاکہ میں بجلی کی بندش کے باعث شائقین فٹبال ورلڈ کپ کا میچ نہ دیکھ پائے جس پر وہ احتجاج کے لئے باہر نکل آئے اور پرتشدد مظاہروں میں کم از کم 30 افراد زخمی ہوئے۔

default

ہزاروں مشتعل افراد نے نہ صرف بجلی فراہم کرنے والے ادارے کی مختلف تنصیبات اور دفاتر پر حملے کئے بلکہ کم از کم 20 گاڑیوں اور بسوں کو بھی نظر آتش کردیا۔ فٹبال شائقین کا یہ ردعمل دراصل بجلی کی بندش کی وجہ سے ہفتے کے روز ارجنٹائن اور نائجیریا کے درمیان کھیلا جانے وال میچ براہ راست  ٹیلی وژن پر نہ دیکھ پانے پر سامنے آیا۔

ڈھاکہ پولیس کے سربراہ اے کے ایم شہید الحق کے مطابق زیادہ تر نقصان سیدآباد کے پاور ڈسٹری بیوشن سینٹر پر مشتعل ہجوم کے حملے کی وجہ سے ہوا۔ پولیس سربراہ کے مطابق مظاہرین نے دارالحکومت کی ایک اہم روڈ بلاک کردی اور ٹائر جلائے۔ اس دوران پولیس کی ایک وین کو بھی جلا دیا گیا۔ مقامی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے آنسو گیس کا استعمال کیا۔

دارالحکومت کو بجلی فراہم کرنے والی ڈھاکہ پاور ڈسٹری بیوشن کمپنی DPDC کے سربراہ فرید الحق کے مطابق مظاہرین کے حملوں میں کم از کم پانچ پاورڈسٹری بیوشن سینٹرز کو نقصان پہنچا۔ فرید الحق کے مطابق مظاہرین نے کمپنی کے دفاتر اور ملازمین پر بھی پتھراؤ کیا۔ جس سے کم از کم نو دفاتر کو بھی نقصان پہنچا۔

فٹبال کی عالمی تنظیم فیفا کی بین الاقوامی درجہ بندی میں بنگلہ دیش کی ٹیم کا 157 واں نمبر ہے، تاہم وہاں بنگلہ دیشی عوام میں فٹبال بے حد مقبول ہے۔

رپورٹ : افسر اعوان / خبر رساں ادارے

ادارت : شادی خان سیف