1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

میانمار: سوچی کی صدر سے ملاقات متوقع

حکومتی ذرائع کے مطابق اپوزیشن رہنما آنگ سان سوچی کی صدر تھائن سائن کے ساتھ آج جمعے کو ایک ملاقات متوقع ہے۔ یہ سوچی کی صدر کے ساتھ پہلی ملاقات ہوگی۔

default

سوچی اور صدر تھائن سائن کی یہ پہلی ملاقات ہو گی

میانمار کی جمہوریت پسند رہنما اور نوبل امن انعام یافتہ اپوزیشن لیڈر آنگ سان سوچی کو گزشتہ برس نومبر میں سات سال کی مسلسل نظربندی کے بعد رہا کیا گیا تھا۔ ان کی رہائی کے باوجود میانمار کی حکومت نے ان کی نقل و حرکت پر کافی حد تک نظر رکھی ہوئی ہے۔

میانمار میں گو کہ ایک نام نہاد سویلین حکومت قائم ہے تاہم ملکی افواج کا پارلیمنٹ اور میانمار کی معیشت اور سیاست پر بڑی حد تک کنٹرول ہے۔ اب پہلی بار یہ امکان ہے کہ سوچی اور صدر تھائن سائن کے درمیان ملاقات ہوگی جس کو مبصرین تاریخی اہمیت کی حامل قرار دے رہے ہیں۔

NO FLASH Thein Sein

میانمار کے صدر تھائن سائن

خبر رساں ادارے اے ایف پی نے میانمار حکومت کے عہدیداروں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ سوچی آج جمعے کو اقتصادی ترقی سے متعلق ایک ورکشاپ میں شرکت کر رہی ہیں جس میں صدر تھائن سائن بھی موجود ہوں گے۔

ایک حکومتی عہدیدار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر اے ایف پی کو بتایا، ’’صدر (تھائن سائن) بھی شرکت کر رہے ہیں، اور دونوں (سوچی اور صدر) کی ملاقات متوقع ہے۔ یہ پہلا موقع ہوگا جب دونوں کی ملاقات ہوگی۔‘‘

حزب اختلاف کی جماعت نیشنل لیگ فار ڈیموکریسی سے وابستہ ذرائع کے مطابق سوچی ینگون میں قائم اپنے دفتر سے بذریعہ کار اس ورکشاپ میں شرکت کے لیے روانہ ہو چکی ہیں۔

خیال رہےکہ سوچی کی جماعت NLD نے سن 1990 کے انتخابات میں کامیابی حاصل کی تھی تاہم ملکی افواج نے اس پارٹی کو حکومت نہیں بنانے دی تھی۔ این ایل ڈی نے گزشتہ برس ہونے والے انتخابات کا بائیکاٹ کیا تھا۔

مبصرین کے مطابق حالیہ چند ماہ میں حکومت کی جانب سے سوچی اور ان کی جماعت کو ایسے پیغامات اور اشارے دیے جا رہے ہیں، جن سے محسوس ہوتا ہے کہ میانمار کی حکومت سوچی اور قومی لیگ برائے جمہوریت کے ساتھ مصالحت کی خواہاں ہے۔

رپورٹ: شامل شمس ⁄ اے ایف پی

ادارت: مقبول ملک

DW.COM