1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

منیلا میں جوئے خانے پر حملہ، کم از کم چھتیس افراد ہلاک

فلپائن کے دارالحکومت منیلا میں ایک مسلح نقاب پوش حملہ آور نے ایک ہوٹل کمپلیکس میں قائم جوئے خانے کو آگ لگا دی، جس کے نتیجے میں کم از کم چھتیس افراد ہلاک ہو گئے۔ حکام نے زور دیا ہے کہ یہ کوئی دہشت گردانہ حملہ نہیں تھا۔

منیلا سے جمعہ دو جون کو ملنے والی نیوز ایجنسی اے ایف پی کی رپورٹوں کے مطابق یہ واقعہ آج جمعے کے دن پیش آیا اور اس حملے کے دوران پرہجوم کسینو میں بھگدڑ مچ جانے کے نتیجے میں درجنوں افراد زخمی بھی ہو گئے۔

منیلا پولیس کے سربراہ رونالڈ ڈے لا روزا نے صحافیوں کو بتایا کہ یہ ہلاکت خیز کارروائی ملکی دارالحکومت کے ریزورٹس ورلڈ نامی ہوٹل کمپلیکس میں کی گئی جو ایک مشہور کسینو ہے اور حملہ آور ایک خود کار رائفل سے مسلح تھا۔

اس شخص نے Resorts World Manila نامی کمپلیکس کے مرکزی قمار خانے والے ہال کو آگ لگا دی۔ یہ کسینو منیلا کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کے بہت قریب واقع ہے۔ پولیس کے مطابق اس ملزم نے آدھی رات کے بعد جائے واردات پر پہلے تو ایم فور طرز کی اپنی خودکار رائفل سے فائرنگ کی اور پھر کسینو ہال کو آگ لگا دی۔

پولیس کے سربراہ رونالڈ ڈے لا روزا نے بتایا کہ اس آتش زنی کے قریب پانچ گھنٹے بعد پولیس اور ریسکیو کارکنوں کو اس ہوٹل سے مجموعی طور پر جو 36 لاشیں ملیں، ان میں حملہ آور کی جلی ہوئی لاش بھی شامل تھی۔

ابتدائی تفتیش کے مطابق ملزم نے اپنی رائفل سے کسینو میں موجود عام لوگوں پر براہ راست فائرنگ نہیں کی تھی بلکہ اس نے صرف وہاں نصب ایک بڑی ٹیلی وژن اسکرین کو نشانہ بنایا تھا۔ مرنے والے زیادہ تر افراد کی موت یا تو زہریلے دھوئیں کے باعث دم گھٹنے سے ہوئی یا پھر وہ آگ کے شعلوں کی زد میں آکر جل گئے تھے۔

پولیس نے یہ بھی بتایا کہ آتش زنی کے بعد نقاب پوش حملہ آور بھگدڑ کے دوران گہرے دھوئیں اور لوگوں کے ہجوم میں کہیں غائب ہو گیا تھا۔ پھر آگ بجھائے جانے کے بعد چند گھنٹوں تک اسے تلاش کیا جاتا رہا تو اس کی جلی ہوئی لاش اسی ہوٹل کے ایک کمرے کے بستر سے ملی۔

بظاہر اس حملہ آور نے واپس اپنے کمرے میں جا کر خود کو پٹرول میں بھیگے ہوئے ایک کمبل میں لپیٹ لیا تھا، جس کے بعد اس نے کمبل کو آگ لگا کر خود کشی کر لی۔