1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

منشیات کی اسمگلنگ، ایک اور اہم سرنگ دریافت

امریکہ اور میکسیکو کے مابین ایک خفیہ سرنگ دریافت کرنے کے بعد متعلقہ حکام نے قریب 14 ٹن ماریجوانا اپنی تحویل میں لے لیا ہے۔ امریکہ اور میکسیکو کے مابین اسمگلنگ کی غرض سے بنائی گئی یہ انتہائی اہم سرنگ قرار دی جا رہی ہے۔

default

خبر رساں ادارے اے ایف پی نے حکام کے حوالے سے بتایا ہے سان دیاگو اور تیخوانہ کو ملانے والی چار سو میٹر طویل سرنگ منگل کو دریافت کی گئی۔ اس سرنگ سے ایک گوادم بھی متصل تھا، جہاں اسمگلنگ کی غرض منشیات اسٹور کی جاتی تھیں۔

امریکی ریاست کیلی فورنیا واقع سان دیاگو کے اوٹے میسا نامی علاقے میں نکلنے والی اس سرنگ کے حصے سے 9 ٹن نشہ آور مواد ماریجونا کی کھیپ پکڑی گئی جبکہ باقی ماندہ نشہ آور مواد میکسیکو کے علاقے میں موجود اس خفیہ سرنگ سے قبضے میں لیا گیا۔

بدھ کو ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئےسان دیاگو میں تعینات امریکی امیگریشن اور کسٹمز کے ایک اعلیٰ اہلکار ڈیرک بینر نے بتایا کہ امریکی سرحد سے برآمد کیا گیا نشہ آور مواد ایک ٹرک میں لدا ہوا تھا۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ اس حوالے سے دو مشتبہ افراد کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

Drogentunnel in Mexiko Flash-Galerie

امریکی حکام نے گزشتہ چاربرسوں کے دوران اسمگلنگ کی غرض سے بنائی گئی 75 خفیہ سرنگوں کا پتہ چلایا ہے

بتایا گیا ہے کہ یہ سرنگ انتہائی عمدگی سے تیار کی گئی تھی، جہاں مصنوعی روشنی اور ہوا داری کا خصوصی خیال رکھا گیا تھا۔ یہ سرنگ چار فٹ اونچی جبکہ تین فٹ چوڑی تھی۔ امریکی حکام کے بقول اس سرنگ کی تعمیر کو دیکھتے ہوئے کہا جا سکتا ہے کہ یہ حال ہی میں تیار کی گئی تھی۔ اس سرنگ کی دریافت کو امریکی حکام نے منیشات کی اسمگلنگ کی روک تھام کے لیے جاری اپنے آپریشن کے لیے ایک اہم کامیابی قرار دیا ہے۔

امریکی حکام نے گزشتہ چاربرسوں کے دوران ایسی ہی 75 سرنگوں کا پتہ چلانے میں کامیابی حاصل کی ہے، جن کی مدد سے میکسیکو سے امریکہ میں منشیات کی اسمگلنگ کی جاتی تھی۔

میکسیکو میں منشیات کی اسمگلنگ ایک انتہائی مہنگا کاروبار سمجھا جاتا ہے اور وہاں ایسی کئی مافیا کام کر رہے ہیں جو صرف منشیات کی اسمگلنگ کا کام کرتے ہیں۔ میکسیکو میں ان مافیا گروہوں اور حکومتی فورسز کے مابین جاری مسلح کارروائیوں کے نتیجے میں 2006 ء سے اب تک قریب 45 ہزار افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں۔

رپورٹ: عاطف بلوچ

ادارت: حماد کیانی

DW.COM

ویب لنکس