1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

فن و ثقافت

ممبئی حملوں پر بیان سلمان کے گلے پڑ گیا

ممبئی حملوں کے حوالے سے بالی وُڈ سٹار سلمان خان کا ایک بیان متنازعہ بن گیا ہے اور اب انہیں معافی مانگنا پڑی ہے۔ سلمان نے کہا کہ ان کا بیان توڑ مروڑ کر پیش کیا گیا، لیکن پھر بھی کسی کو تکلیف پہنچی تو وہ معذرت خواہ ہیں۔

default

سلمان خان

بھارتی خبررساں ادارے پی ٹی آئی کے مطابق پاکستان کے ایک ٹی وی چینل کے ساتھ انٹرویو میں سلمان نے کہا تھا کہ 26 نومبر2008 ء کے ممبئی دہشت گردانہ حملوں کا نشانہ امراء بنے، جس کی وجہ سے انہیں بڑھا چڑھا کر پیش کیا گیا۔ ان کے بیان پر تنقید کا سلسلہ شروع ہوا تو انہوں نے صفائی پیش کر دی ہے۔

سلمان نے کہا، ’میں نے تقریباﹰ تین ہفتے پہلے ایک انٹرویو دیا، جسے غلط انداز سے پیش کیا گیا۔ میں نے تو صرف اتنا کہا تھا کہ سب لوگوں کی جان برابر ہوتی ہے، چاہے امیر ہو یا غریب۔ اس کے برعکس کچھ دہشت گردانہ حملوں پر میڈیا زیادہ توجہ دیتا ہے۔‘

انہوں نے کہا، ’میرے خیال میں ہر جان اہم ہے۔ دہشت گردانہ کارروائی کہیں بھی ہو، غلط ہے۔ دہشت گردوں کی کوئی قومیت نہیں ہوتی، ان کا کوئی دین ایمان نہیں ہوتا۔ میں ہمیشہ سے ہی

Mehr als 100 Tote bei Terrorserie in Bombay

فائیوسٹار ہوٹل بھی ممبئی حملوں کا نشانہ بنے

اپنے ملک کی سکیورٹی فورسز پر بھروسہ کرتا ہوں۔ میں کسی کا دل دکھانا نہیں چاہتا، لیکن پھر بھی کسی کو میری کوئی بات بری لگی تو میں اس کے لئے معافی چاہتا ہوں۔‘

سلمان نے یہ بھی کہا ہے کہ ان کا یہ انٹرویو پاکستانی ٹیلی ویژن چینل ایکسپریس 24/7 نے غلط طریقے سے پیش کیا۔ انہوں نے کہا کہ اس ٹیلی ویژن چینل نے ان کے انٹرویو کا ایک حصہ چلایا، جسے بعدازاں دیکھ کر انہیں خود بھی اس کی نزاکت کا احساس ہوا۔

واضح رہے کہ سلمان خان نے مستقبل میں اپنے تمام میڈیا انٹرویوز ریکارڈ کرنے کا عندیہ بھی دیا ہے۔ یہ تنازعہ ایسے وقت سامنے آیا ہے، جب سلمان خان کی فلم دبنگ ریلیز کے بعد باکس آفس پر اچھی جا رہی ہے۔

رپورٹ: ندیم گِل

ادارت: افسر اعوان

DW.COM

ویب لنکس