1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

ملاڈچ کو کینسر ہے، وکیل

بوسنیا سرب جنگ کے ملزم راتکو ملاڈچ کے وکیل نے کہا ہے کہ دو برس قبل ملاڈچ کو کینسر کے علاج کے لیے بلغراد کے ہسپتال میں داخل کیا گیا تھا۔ ملاڈچ آج جمعے کے روز عدالت میں پیش ہوں گے۔

default

راتکو ملاڈچ

بوسنیائی مسلمانوں کے قتلِ عام کے الزام میں گرفتار سابق بوسنیائی سرب آرمی چیف راتکو ملاڈچ آج جمعے کے روز دی ہیگ میں واقع انٹرنیشنل کرمنل کورٹ میں پیش ہوں گے۔ پیشی سے قبل جمعرات کو انہیں ہسپتال میں داخل کیا گیا۔ ملاڈچ کے وکیل کا کہنا ہے راتکو ملاڈچ کینسر کی بیماری کا شکار ہیں اور انہیں سن دو ہزار نو میں کینسر کے علاج کے لیے بلغراد کے ایک ہسپتال میں داخل کیا گیا تھا۔

’میرے پاس میڈیکل ریکارڈز ہیں جو ثابت کرتے ہیں کہ ملاڈچ کو سن دوہزار نو میں لِمفوما کے علاج کے لیے بلغراد کے ہسپتال میں داخل کیا گیا تھا،‘ ملاڈچ کے وکیل کا بیان۔

Belgrad Serbien Pro Ratko Mladic Demonstration NO FLASH

ملاڈچ کے حامیوں نے بلغراد میں مظاہرے کیے

دی ہیگ کی فوجداری عدالت کے وکیلِ استغاثہ کے مطابق ملاڈچ کے خلاف مقدمے کے باقاعدہ سماعت شروع ہونے میں کئی ماہ لگ سکتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ ایک پیچیدہ کیس ہے اور اس کے لیے خاصی تیّاری کرنی پڑے گی۔

جمعے کو انہتر سالہ ملاڈچ عدالت میں پیش ہو کر اپنا تعارف کروائیں گے اور جج کے بعض سوالات کا جواب دیں گے۔

ملاڈچ پر انیس سو بانوے سے انیس سو پچانوے تک جاری رہنے والی بوسنیا جنگ کے دوران جنگی جرائم کے ارتکاب اور نسل کشی میں ملوّث ہونے کے حوالے سے گیارہ الزامات ہیں۔ اس جنگ میں ایک لاکھ کے قریب افراد کو جان سے ہاتھ دھونے پڑے تھے۔ ملاڈچ پر آٹھ ہزار کے قریب بوسنیائی مسلمانوں کے قتل کا الزام ہے۔

ملاڈچ کے وکیل کی کوشش ہے کہ ملاڈچ کی بیماری کو بیناد بنا کر اپنے مؤکل کے لیے کسی قسم کی رعایت حاصل کی جاسکے۔

رپورٹ: شامل شمس⁄ خبر رساں ادارے

ادارت: افسر اعوان

DW.COM