1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

ملالہ، دنیا کی سب سے کم عمر امن کی پیامبر

اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیو گوٹیرش نے ملالہ یوسف زئی کو اس عالمی ادارے کی امن کی سفیر منتخب کیا ہے۔ یہ اقوام متحدہ کے سربراہ کی جانب سے عالمی شہری تصور کیے جانے والی مقبول شخصیات کے لیے سب سے بڑا اعزاز ہے۔

 اقوام متحدہ کے ترجمان اسٹیفان دوژارک نے جمعہ سات اپریل کو بتایا کہ انیس سالہ ملالہ یوسف زئی کو اگلے ہفتے پیر کے دن ایک تقریب کے دوران باقاعدہ طور پر امن کا سفیر بنا دیا جائے گا۔ ان کے بقول اس کے بعد ملالہ اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل کے ساتھ بات چیت کریں گی اور اس ملاقات میں عالمی سطح پر لڑکیوں کی تعلیم کے لیے کام کرنے والی تنظیموں کے نمائندے بھی موجود ہوں گے۔

 اس تناظر میں اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونو گوٹیرش نے کہا، ’’شدید خطرات کے باوجود ملالہ یوسف زئی خواتین، لڑکیوں اور دیگر تمام لوگوں کے حقوق کے لیے جدوجہد کرنے کے اپنے غیر متزلزل عہد پر قائم رہیں۔‘‘ ا

Großbritannien Treffen Malala Yousefzai und Muzoon Almellehan

ملالہ کی کوششوں نے دنیا میں بہت سے دیگر لوگوں کو متحرک کیا ہے، انتونیو گوٹیرش

ن کے بقول لڑکیوں کی تعلیم کے لیے ملالہ کی کوششوں نے دنیا میں بہت سے دیگر لوگوں کو متحرک کیا ہے، ’’اب ہماری سب سے کم عمر ترین امن کی پیامبر  دنیا کو زیادہ پر امن اور منصفانہ بنانے کے لیے اور بھی بھرپور انداز میں کام کرسکے گی۔‘‘

ملالہ یوسف زئی کو 2014ء میں امن کا نوبل انعام دیا گیا تھا اور وہ یہ انعام حاصل کرنے والی دنیا کی کم عمر ترین شخصیت ہیں۔ وہ بچوں اور خاص طور پر لڑکیوں کی تعلیم اور حقوق کے لیے سرگرم ہیں۔ ملالہ کے علاوہ ہالی وڈ کے اداکار مائیکل ڈگلس اور لیونارڈو ڈی کاپریو، ماہر حیاتیات جین گوڈیل کے ساتھ ساتھ موسیقار بیرنبوئم اور یویو ما کو امن کے پیامبر منتخب کیا گیا ہے۔ اقوام متحدہ کے مطابق امن کے پیامبر اپنے وقت، صلاحیتوں اور جذبے کو استعمال کرتے ہوئےمختلف شعبوں میں جاری اقوام متحدہ کے منصوبوں میں تعاون فراہم کرتے ہیں تاکہ عالمی توجہ حاصل کی جا سکے۔