’مغل بادشاہوں اور مہاراجاؤں کا خزانہ‘ چوری | معاشرہ | DW | 04.01.2018
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

’مغل بادشاہوں اور مہاراجاؤں کا خزانہ‘ چوری

اٹلی کے شہر وینس میں الارم سسٹم کو بند کیے بغیر نایاب بھارتی زیورات چوری کر لیے گئے ہیں۔ ان زیورات کی قیمت کئی ملین یورو ہے۔ پولیس کے مطابق چور ’انتہائی ماہر اور تربیت یافتہ‘ معلوم ہوتے ہیں۔

یہ نایاب بھارتی زیورات وینس میں ہونے والی ایک نمائش سے چوری کیے گئے ہیں۔ اس نمائش میں بھارتی مہاراجاؤں کے نایاب خزانے  کی متعدد اشیاء رکھی گئی تھیں۔ پولیس کی ابتدائی رپورٹ کے مطابق ایک چور نے اس طرح ایک ڈسپلے باکس کھولا کہ سکیورٹی الارم بھی نہیں چلا۔ اس چوری میں ایک دوسرا شخص بھی شامل تھا، جس نے تکنیکی لحاظ سے اس چوری میں مدد فراہم کی ہے۔

پولیس کے مطابق الارم اس وقت بجا، جب دونوں چور نمائشی ہال سے نکل چکے تھے اور وینس کے مرکزی بازار میں جا کر روپوش ہو چکے تھے۔ وینس پولیس کے کمشنر ویٹو گاگلاردی کا صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ چوروں کی طریقہ واردات سے معلوم ہوتا ہے کہ وہ انتہائی ’ماہر اور تربیت یافتہ‘ تھے اور یہ شبہ بھی ہے کہ وہ پہلے بھی ہائی پروفائل چوریوں میں ملوث رہ چکے ہیں۔

اس پولیس افسر کا مزید کہنا تھا، ’’ہمیں معلوم ہے کہ یہ ماہر اور پیشہ ور چور تھے۔ نمائشی ہال کو انتہائی جدید ٹیکنالوجی سسٹم سے محفوظ بنایا گیا تھا۔‘‘ تاہم چوری کیے گئے زیورات کی قیمت صرف چند ملین یورو ہی بتائی گئی ہے۔

وینس میں ہونے والی اس نمائش کا نام ’مغل بادشاہوں اور مہاراجاؤں کا خزانہ‘ رکھا گیا تھا۔

DW.COM