1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

مصر کے گرجا گھروں میں بم حملے، ہلاکتوں کی تعداد تینتالیس

آج اتوار نو اپریل کو مصری شہروں طنطا اور اسکندریہ میں ’پام سنڈے‘ کے موقع پر ہونے والے بم حملوں میں مجموعی طور پر ہلاکتوں کی تعداد 43 ہو گئی ہے۔ ان بم حملوں کی ذمہ داری ’اسلامک اسٹیٹ’ نے قبول کر لی ہے۔

Ägypten nach Anschlag auf Kirche inTanta (Reuters/M. Abd el Ghany)

مصری سکیورٹی ذرائع کے مطابق  طنطا کے مار گِرگِس کاپٹک چرچ میں زخمی ہونے والے پچاس افراد میں سے کچھ کی حالت انتہائی تشویشناک ہے

بندرگاہی شہر اسکندریہ میں کیے گئے خودکش حملے میں 16  افراد  ہلاک ہوئے ہیں جبکہ 41 زخمی بتائے گئے ہیں۔ یہ حملہ ایک قبطی گرجاگھر کے قریب کیا گیا۔ اس سے قبل صبح کے وقت دریائے نیل کے ڈیلٹا میں واقع شہر طنطا میں ایک گرجا گھر کے اندر ہونے والے بم دھماکے میں کم ازکم 27 افراد ہلاک اور 78 زخمی ہوئے۔ مصری سکیورٹی ذرائع کے مطابق  طنطا کے مار گِرگِس کاپٹک چرچ میں زخمی ہونے والے پچاس افراد میں سے کچھ کی حالت انتہائی تشویشناک ہے۔ یہ حملے  مسیحی برادری کے مقدس تہوار ایسٹر کے ہفتے کے آغاز پر کیے گئے ہیں جبکہ کیتھولک کلیسا  کے روحانی پیشوا پوپ فرانسس بھی چند ہی ہفتوں بعد مصر کا دورہ کرنے والے ہیں۔

Ägypten weiterer Anschlag auf Kopten in Alexandria (Reuters/Str)

یہ حملے  مسیحی برادری کے مقدس تہوار ایسٹر کے ہفتے کے آغاز پر کیے گئے ہیں

بم حملوں کے بعد ہنگامی صورتِ حال سے نمٹنے کے لیے مصری صدر عبدالفتاح السیسی نے ملک بھر میں فوج تعینات کرنے کا اعلان کر دیا ہے۔ صدر دفتر سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق سپریم کمانڈر آف آرمڈ فورسز السیسی نے تمام صوبوں میں محکمہ پولیس کو معاونت فراہم کرنے کی خاطر فوج کی تعیناتی کا حکم دے دیا ہے۔

مصر میں مسیحی اقلیت کے خلاف پر تشدد کارروائیاں ہوتی رہتی ہیں۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک ٹویٹ میں اپنے حلیف ملک مصر کے دو گرجا گھروں میں ہوئے ان بم حملوں پر رنج و غم کا اظہار کیا ہے تاہم ساتھ ہی انہوں نے ٹویٹ میں یہ بھی لکھا ہے کہ اُنہیں امید ہے کہ مصر کے صدرعبد الفتاح السیسی جلد ہی اس مشکل صورتِ حال پر قابو پا لیں گے۔ اسرائیل، ترکی اور حماس سمیت کئی ممالک نے ان بم حملوں کی بھر پور مذمت کی ہے۔

DW.COM