1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

فن و ثقافت

مصری ملکہ نیفر تیتی کا مجسمہ برلن میوزیم میں

جرمن اور مصری حکام کا کہنا ہے کہ مصری ملکہ نیفر تیتی کے مجسمے کی ملکیت کا معاملہ برلن اور قاہرہ کے مابین تعلقات میں کشیدگی کا باعث نہیں بننا چاہئے۔ یہ مجسمہ اس وقت برلن کے میوزیم میں نمائش کے لئے رکھا گیا ہے۔

default

جرمن سرکاری اہلکاروں کا کہنا ہے کہ یہ مجسمہ باقاعدہ قانونی طور پر سن 1913 میں جرمنی نے خریدا تھا۔ جبکہ مصری حکام مسلسل اس کی واپسی کا اصرار کرتے چلے آ رہے ہیں۔ مشرق وسطیٰ کے تین روزہ دورے پر گئے ہوئے وفاقی جرمن وزیز خارجہ گیڈو ویسٹرویلے نے مصر میں اپنے مصری ہم منصب احمد ابو الغیث سے ملاقات کے دوران کہا کہ وہ نہیں سمجھتے کے نیفر تیتی کے مجسمے کی ملکیت کا متنازعہ معاملہ جرمنی اور مصر کے قریبی دوستانہ تعلقات کو نقصان پہنچانے کا باعث بن سکتا ہے۔ تاہم مصری

Neues Museum Berlin, Nofretete

برلن کے عجائب گھر میں نیفرتیتی کا مجسمہ

وزیر خارجہ نے نہایت محتاط انداز میں یہ کہا کہ اس بارے میں کوئی نا کوئی معاہدہ طے پانا چاہئے۔ احمد ابولغیث نے کہا’ ہمیں کسی نا کسی ایسے نتیجے پر ضرور پہنچیں گے جو دونوں ملکوں کے لئے اطمنان کا باعث ہو‘۔

چند روز قبل جرمنی کے ثقافتی امور کے ریاستی وزیر ’برنڈ نؤیمن‘ نے ایک بیان میں نہایت اٹل لہجے میں کہا تھا کہ نیفر تیتی کا مجسمہ برلن میں ہی رہے گا۔ جرمن وزیر خارجہ نے مصر میں اس بارے میں مصری وزیر خارجہ سے بات چیت کے دوران جرمن موقف کی وضاحت کچھ یوں کی کہ’ مصری ملکہ نیفر تیتی ‘ کا مجسمہ اس قدر نازک اور قیمتی ہے کہ اس کی حفاظت کے لئے یہ ضروری ہے کہ یہ جہاں ہے وہیں رہے، یعنی برلن کے عجائب گھر میں۔ ویسٹر ویلے نے مزید کہا کہ یہ مجسمہ صرف جرمنی اور مصرکا نہیں بلکہ

Neues Museum Berlin, Nofretete

برلن کے عجائب گھر میں نیفرتیتی کے مجسمے کو دیکھنے والے شائقین

عالمی ثقافت کا ایک گراں قدرشہ پارہ ہے جس کی حفاظت کے لئے اس کا برلن میں رہنا ضروری ہے۔ اس پر مصری وزیر خارجہ نے نیفر تیتی کے مجسمے کو دیکھنے کی خواہش ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ نہ صرف نیفر تیتی کا مجسمہ بلکہ مغربی ممالک میں جہاں جہاں بھی قدیم مصری تہذیب کے انمول ثقافتی خزانے نمائش کے لئے رکھے گئے ہیں وہ انہیں واپس اپنے ملک میں دیکھنا چاہتے ہیں۔

نیفر تیتی فراعین مصر کے 18ویں شاہی خاندان سے تعلق رکھتی تھیں۔ انہیں نہ صرف انکی خوبصورتی کی وجہ سے بہت زیادہ شہرت حاصل تھی بلکہ نفیر تیتی کو ان کے دور کی ایک غیر معمولی طاقت رکھنے والی خاتون سمجھا جاتا ہے۔ یہاں تک کہ تاریخ میں ملکہ نیفز تیتی کو ان کے شوہر یا فرعون وقت اخناتن سے زیادہ شہرت کا حامل پایا گیا ہے۔

رپورٹ: کشور مصطفیٰ

ادارت: عابد حسین