1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

مصری صدر نے حکومت برخاست کردی

ملک بھر میں جاری حکومت مخالف مظاہروں کے تناظر میں مصری صدر حسنی مبارک نے ہفتے کے روز عوام سے خطاب کرتے ہوئے حکومت کی برطرفی کا اعلان کیا اورکہا کہ وہ ملک میں جمہوری اور معاشی اصلاحات کے لئے نئے اقدامات کریں گے۔

default

مصر میں جاری پرتشدد مظاہروں کے چار روز بعد ہفتے کی صبح قوم سے اپنے خطاب میں حسنی مبارک نے کہا کہ انہوں نے حکومت کو مستعفی ہونے کے لئے کہہ دیا ہے اور کل ملک میں نئی کابینہ اپنی ذمہ داریاں سنبھال لے گی۔ دارالحکومت قاہرہ سمیت ملک کے متعدد شہروں میں مظاہرین اور سکیورٹی فورسز کے درمیان ہونے والی جھڑپوں میں اب تک 27 افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔ حسنی مبارک نے اپنے خطاب میں عندیہ دیا کہ وہ ملک میں معاشی اور سیاسی اصلاحات پر توجہ دیں گے۔

Ägypten Kairo Proteste Hosni Mubarak

مصری صدر نے حکومت کی تبدیلی کا اعلان کیا ہے

’’ہم اصلاحات کی پٹری سے نہیں اتریں گے بلکہ اس ضمن میں ہم نئے اقدامات اٹھائیں گے تاکہ ملک میں عدلیہ کی آزادی، قانون کی حکمرانی اور شہریوں کے لئے آزادی کو یقینی بنایا جا سکے۔‘‘

انہوں نے کہا کہ ملک میں مہنگائی اور بے روزگاری کے خاتمے کے لئے بھی موثر اقدامات کئے جائیں گے تاکہ شہریوں کے معیار زندگی کو بہتر بنایا جا سکے۔

حسنی مبارک گزشتہ تین دہائیوں سے مصر پر حکمرانی کر رہے ہیں اور ایک عام رائے ہے کہ وہ اپنے بعد اپنے بیٹے کو ملک کا صدر دیکھنا چاہتے ہیں۔ حسنی مبارک نے اپنے خطاب میں کہا کہ وہ ایسے نئے اقدامات اٹھائیں گے، جن سے جمہوریت اور انصاف کو تقویت ملے۔ تاہم انہوں نے اس حوالے سے اقدامات کی تفصیل نہیں بتائی۔

Ägypten Kairo Proteste

ان مظاہروں میں ہزاروں افراد شریک ہیں

دوسری جانب ملک بھر میں جاری مظاہروں کی شدت میں اضافہ دیکھا جا رہا ہے اور دارالحکومت قاہرہ سے شروع ہونے والے یہ مظاہرے اب ملک کے دیگر شہروں تک بھی پھیل چکے ہیں۔ مظاہروں میں حسنی مبارک کے خلاف بھی نعرے بازی کی جا رہی ہے۔

مبارک نے اپنے اس خطاب میں مظاہروں میں معصوم انسانی جانوں کے ضیاع پر دکھ کا اظہار کیا۔

’’مجھے شہریوں اور پولیس کے معصوم افراد کی جانوں کے ضیاع پر شدید دکھ ہے۔ میں عوام سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ صبر و تحمل کا مظاہرہ کریں اور پرامن رہیں۔‘‘ انہوں نے یہ بھی کہا کہ آزادی اور افراتفری کے درمیان ایک باریک لکیر ہوتی ہے، جسے پھلانگنا نہیں چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ ان عوامی مظاہروں سے انہوں نے یہی سمجھا ہے کہ عوام حکومت سے مہنگائی، بے روزگاری اور غربت کے خلاف اقدامات کی توقع رکھتے ہیں۔

رپورٹ : عاطف توقیر

ادارت : عدنان اسحاق

DW.COM

ویب لنکس