1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

مسجد الاقصیٰ میں 50 برس سے کم عمر فلسطینیوں کا داخلہ ممنوع

مسجد الاقصیٰ میں جمعہ اٹھائیس جولائی کو سکیورٹی کے سخت انتظامات کر دیے گئے ہیں۔ کسی ممکنہ ناخوشگوار صورت حال سے بچنے کے لیے حکام نے پچاس برس سے کم عمر کے افراد کو نمازِ جمعہ کی ادائیگی سے روک دیا ہے۔

اسرائیلی پولیس نے کہا ہے کی پچاس برس سے کم عمر کے فلسطینی مسلمانوں کو مسجد الاقصیٰ میں نماز جمعہ کی اجازت نہیں ہو گی۔ جمعرات ستائیس جولائی کو مشرقی یروشلم میں واقع حرم شریف یا ٹیمپل ماؤنٹ کے انتہائی حساس مقام پر فلسطینیوں اور اسرائیلی پولیس کے مابین تازہ جھڑپوں میں کم ازکم پچاس فلسطینی زخمی ہو گئے تھے۔

یروشلم: اسرائیلی سکیورٹی فورسز اور فلسطینیوں میں پھر جھڑپیں

یروشلم میں نئے سکیورٹی اقدامات اور آٹھ فلسطینیوں کی ہلاکت

الجزیرہ ٹیلی وژن تشدد کو ہوا دے رہا ہے، اسرائیلی وزیراعظم

آج نماز جمعہ کے موقع پر فلسطینی مسلمانوں کی بھاری تعداد کی آمد کے تناظر میں اسرائیلی سکیورٹی حکام کو ایسے خدشات لاحق ہیں کہ نماز کے بعد فلسطینیوں کی جانب سے ایک مرتبہ پھر احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ شروع ہو سکتا ہے۔ اس صورت حال سے بچنے کے لیے اسرائیلی انتظامیہ نے مشرقی یروشلم میں سکیورٹی کو انتہائی چوکس کر دیا گیا ہے۔ اضافی پولیس کے دستے تعینات کر دیے گئے ہیں۔

Israel Jerusalem Gewalt am Tempelberg (Reuters/M. Awad)

مسجد اقصیٰ مسلمانوں کا تیسرا مقدس ترین مقام تصور کیا جاتا ہے

جمعرات ستائیس جولائی  کو اسرائیلی حکومت نے مسجد الاقصیٰ میں داخلے کے مقام پر سے میٹل ڈدیٹیکٹر ہٹا لیے تھے۔ تقریباً دو ہفتوں کے بعد ہزاروں فلسطینیوں نے عصر کی نماز ادا کی تھی۔ فلسطینی اتھارٹی کے لیڈر محمود عباس نے بھی فلسطینیوں کو بڑی تعداد میں اس نماز میں شریک ہونے کی درخواست کی تھی۔ میٹل ڈیٹیکٹر نصب کرنے کی وجہ حرم شریف کے احاطے سے کی جانے والی فائرنگ کے نتیجے میں اسرائیلی پولیس کے دو اہلکاروں کی ہلاکت تھی۔

ویڈیو دیکھیے 00:47

اسرائیلی فوج کے ساتھ فلسطینیوں کی جھڑپیں

نماز کے ادائیگی کے بعد یروشلم میں ہونے والی جھڑپوں کے نتیجے میں چار درجن سے زائد فلسطینی زخمی ہوئے تھے۔ سکیورٹی حکام کے مطابق مسجد الاقصیٰ کے نزدیک کثیر تعداد میں فلسطینی جمع تھے اور انہوں نے اسرائیلی فورسز کو دیکھتے ہی ناراضی کا اظہار کرتے ہوئے اشتعال انگیزی شروع کر دی۔ گزشتہ ہفتے کے دوران اس مقام پر ہونے والی مختلف جھڑپوں کے دوران کم از کم پانچ فلسطینی ہلاک ہو گئے تھے۔

مسلمانوں کے تیسرے مقدس مقام حرم شریف میں مسجد الاقصیٰ اور قبتہ الصخرا واقع ہیں۔ یہودی بھی اسے اپنے لیے مقدس مقام قرار دیتے ہیں اور اس کو ٹیمپل ماؤنٹ کہتے ہیں۔

DW.COM

Audios and videos on the topic

ملتے جلتے مندرجات