1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

مزدور یونینوں کے ساتھ تنازعے پر قنطاس نے تمام پروازیں منسوخ کر دیں

آسٹریلوی فضائی کمپنی قنطاس نے لیبر یونینوں کے ساتھ تنازعے کی وجہ سے ملکی و غیرملکی تمام پروازیں منسوخ کر دی ہیں۔ اس فیصلے سے ہزاروں مسافروں کے ساتھ ساتھ تقریبا ڈیڑھ درجن عالمی رہنما بھی متاثر ہوئے ہیں۔

default

کینبرا حکومت نے اس حوالے سے خصوصی لیبر ٹریبیونل سے مداخلت کے لیے کہا ہے، جس کا مقصد قنطاس اور ملکی معیشت کو خسارے سے بچانا ہے۔

خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق یہ پیش رفت آسٹریلوی وزیر اعظم جولیا گیلارڈ کے لیے خاصی ندامت کا باعث بن رہی ہے، جو جنوبی شہر پرتھ میں کامن ویلتھ ممالک کے رہنماؤں کے اجلاس کی میزبانی کر رہی تھیں۔ ان میں سے سترہ رہنما اتوار کو قنطاس کے ذریعے واپسی کا سفر کرنے والے تھے۔

جولیا گیلارڈ کا کہنا ہے: ’’قنطاس کا تنازعہ طول پکڑ گیا ہے اور مجھے قومی معیشت کی فکر ہے۔‘‘

قنطاس کے چیف ایگزیکٹو ایلن جوئس کا کہنا ہے: ’’وہ (یونینیں) ہماری ساکھ اور حکمت عملی کو نقصان پہنچا رہی ہیں۔ وہ جانتے بوجھتے کمپنی کو خسارے میں دھکیل رہے ہیں۔ صارفین اب ہم سے دُور بھاگ رہے ہیں۔‘‘

انہوں نے کہا کہ یونینیں ناممکن دعووں پر اَڑی ہوئی ہیں، جو محض تنخواہوں سے متعلق نہیں بلکہ وہ کاروبار چلانے کے لیے کمپنی پر اپنی مرضی مسلط کرنا چاہتی ہیں۔

جوئس نے کہا کہ پروازوں کی منسوخی سے کمپنی کو یومیہ دو کروڑ آسٹریلوی ڈالرز کا نقصان ہو گا۔ قبل ازیں دو ہزار آٹھ میں انجینئرز کے ساتھ تنازعے کے باعث قنطاس کو ایک سو تین ملین آسٹریلوی ڈالرز کا خسارہ ہوا تھا۔

Luftverkehr Airline Qantas

قنطاس سے سفر کرنے والے ہزاروں مسافر ہوائی اڈوں پر پھنسے ہیں

پائلٹوں سے لے کر کیٹرنگ سے وابستہ ملازمین کی یونینیں ستمبر سے قنطاس پر دباؤ ڈال رہی ہیں۔ وہ ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ چاہتی ہیں جبکہ ایئرلائن کی جانب سے اخراجات میں کمی کے منصوبے کی بھی مخالفت کر رہی ہیں۔

یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ قنطاس ایشیامیں دو نئی فضائی کمپنیوں کے قیام کے ساتھ ساتھ نو ارب ڈالر مالیت کے ایئربس طیارے خریدنے کا منصوبہ رکھتی ہے۔ کمپنی ایک ہزار ملازمتوں میں کٹوتی بھی کرنا چاہتی ہے۔

روئٹرز کے مطابق آسٹریلیا میں ایوی ایشن تجزیہ کار ٹام بولنٹائن کا کہنا ہے کہ پروازوں کی منسوخی کے ذریعے قنطاس اس تنازعے میں حکومت کو ملوث کرنا چاہتی ہے۔

رپورٹ: ندیم گِل / خبر رساں ادارے

ادارت: افسر اعوان

DW.COM

ویب لنکس