1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

مردان میں لڑکیوں کے کالج پر حملہ، 17 طالبات زخمی

پاکستان کے شمال مغربی علاقے مردان میں آج منگل کے روز مبینیہ طور پرطالبان کی جانب سےخواتین کے کالج پر گرینیڈ سے حملہ کیا گیا۔ سرکاری حکام کے مطابق حملےکیے نتیجے میں 17 طالبات زخمی ہو گئیں۔

default

مردان شہری انتظامیہ کے سربراہ محمد عدیل کے مطابق یہ واقعہ پاکستان کے صوبے خیبر پختونخواہ کے صوبائی دارالحکومت پشاور سے 50 کلو میٹر دور پیش آیا۔ ان کے مطابق دو عسکریت پسند خواتین کے کالج پر گرینیڈ سے حملہ کرنے کے بعد فرار ہوگئے۔

محمد عدیل نے 17 طالبات کے زخمی ہونے کی تصدیق کی ہے، جن میں سے دو کی حالت تشویش ناک بتائی جا رہی ہے۔

طالبان کی جانب سے کیے جانے والے ان حملوں کے سبب اب تک ملک کے 200 تعلیمی ادارے بند ہو چکے ہیں۔

رواں سال جنوری میں پشاور کے ایک اسکول پر ایسے ہی کیے جانے والے ایک حملے میں کم از کم دو افراد ہلاک جبکہ 15 زخمی ہو گئے تھے۔ زخمیوں میں زیادہ تعداد بچوں کی تھی۔

واضح رہے کہ طالبان جنگجوؤں کی جانب سے اکثر و بیشتر لڑکیوں کے اسکولوں اور کالجوں کو نشانہ بنایا جاتا رہا ہے۔ طالبان کے خیال میں اسلام خواتین کو جدید تعلیم حاصل کرنے کی اجازت نہیں دیتا۔

رپورٹ: عنبرین فاطمہ

ادارت: امتیاز احمد

DW.COM