1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

مراکشی باکسر کا رنگ میں مقابلے کے بجائے خواتین پر جنسی حملہ

اولمپک میں شرکت کے لیے گئے ہوئے مراکش کے ایک باکسر کو برازیلین پولیس نے جنسی حملے کے الزام میں گرفتار کر لیا ہے۔ اس باکسر پر اولمپک ولیج میں خدمات انجام دینے والی دو خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کرنے کا الزام ہے۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی نے برازیلین پولیس کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان کے حوالے سے بتایا ہے کہ مراکش سے تعلق رکھنے والے 22 سالہ باکسر حسن صعدہ پر شبہ ہے کہ اس نے سروس اسٹاف کی دو خواتین کو بدھ کے روز جنسی طور پر ہراساں کیا۔ اس بیان میں کہا گیا ہے، ’’تحقیقات کے مطابق اس ایتھلیٹ نے تین اگست کو اولمپک ولیج میں کمرے کی صفائی کرنے والی دو برازیلین خواتین پر جنسی حملہ کیا۔‘‘

جرمن خبر رساں ادارے ڈی پی اے کے مطابق پولیس رپورٹ میں ’جنسی زیادتی‘ کی اصطلاح استعمال کی گئی ہے تاہم برازیلین قوانین کے مطابق ان الفاظ کو نسبتاﹰ کم شدید جنسی جرائم کے لیے بھی استعمال کیا جاتا ہے، خاص طور پر جب متاثرہ فرد کم عمر ہو۔ پولیس کے مطابق صعدہ کو ابتدائی طور پر 15 دن کے لیے حراست میں رکھا جائے گا اور اس دوران جنسی زیادتی کے الزامات کی تفتیش کی جائے گی۔ برازیلین قوانین کے مطابق کیس کی تفتیش کے دوران ملزم کو دو ہفتو‌ں سے زیادہ وقت تک بھی حراست میں رکھا جا سکتا ہے۔

پولیس ذرائع نے نیوز سائٹ G1 کو بتایا کہ صعدہ پر الزام ہے کہ اس نے صفائی کرنے والی خواتین کو اپنے کمرے میں بُلایا اور پھر ان سے چھیڑ چھاڑ کی۔

پولیس کے مطابق صعدہ کو ابتدائی طور پر 15 دن کے لیے حراست میں رکھا جائے گا

پولیس کے مطابق صعدہ کو ابتدائی طور پر 15 دن کے لیے حراست میں رکھا جائے گا

خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق مراکش سے تعلق رکھنے والے ایتھلیٹ حسن صعدہ کو باکسنگ کے لائٹ ہیوی ویٹ اولمپک مقابلوں میں شرکت کرنا تھی اور ابتدائی مرحلے میں اس کا مقابلہ ترکی کے باکسر محمت نادر سے ہفتے کے روز ہونا تھا۔

انٹرنیشنل باکسنگ ایسوسی ایشن کی ویب سائٹ پر صعدہ کو لائٹ ہیوی ویٹ کیٹیگری میں ’بین الاقوامی منظر پر نو وارد‘ قرار دیا گیا ہے جو مراکش میں نوجوانوں کے دو باکسنگ ٹائٹل جیت چکا ہے۔

اے پی کے مطابق اس حوالے سے ریو ڈی جنیرو میں قائم مراکش کے سفارت خانے سے بذریعہ ٹیلی فون اور ای میل رابطہ کرنے کی کوشش کی گئی، مگر وہاں سے کوئی جواب نہ ملا۔ مراکش کے اس باکسر کی گرفتاری ایک ایسے موقع پر عمل میں آئی ہے جب اولمپک کھیلوں کی افتتاحی تقریب میں محض ایک روز باقی رہ گیا ہے اور اس سلسلے میں عالمی رہنما ریو ڈی جنیرو پہنچ رہے ہیں۔