1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

فن و ثقافت

مالیاتی بحران: جرمن حکومت نے بینکوں پر سخت شرائط عائد کردیں

جرمن حکومت نے امداد کے ساتھ بینکوں کے لیے سخت شرائط کا اعلان بھی کردیا ہے۔

default

جرمن بینک بائرن ایل بے کے مطابق اس کو حکومت سے پانچ بلین یوروز کی امدادی رقم درکار ہوگی

عالمی مالیاتی بحران کے تناظر میں جرمن حکومت کے چار سو اسّی بلین یوروز کے بیل آؤٹ پیکج سے مستفید ہونے کے لیے جرمنی کے سرکاری بینک حکومت سے پہلے رجوع کریں گے۔ بینکوں کے لیے جرمن حکومت کا یہ بیل آؤٹ پلان پیر کے روز سے نافذ العمل ہوگیا ہے۔

Deutsche Bank in Frankfurt

ڈائچے بینک جرمنی کا سب سے بڑا بینک ہے۔ ڈائچے بینک نے کہا ہے کہ اس کو حکومتی امداد کی ضرورت نہیں ہے

جرمنی کے سرکاری بینک بائرن ایل بے بینک نے تصدیق کی ہے کہ امداد کے ضمن میں اس کو حکومت سے پانچ بلین یوریز کی خطیر رقم درکار ہوگی۔ دریں اثناء جرمنی کے بہت سے بڑے بینکوں نے کہا ہے کہ ان کو حکومتی امداد کی ضرورت نہیں ہے۔ ان میں جرمنی کا سب سے بڑا بینک ڈائچے بینک شامل ہے۔

Deutschland Finanzkrise Börse in Frankfurt Börsenmakler

مالیاتی بحران سے جرمن بینکوں کو بچانے کے لیے جرمن پارلیمان نے گزشتہ ہفتے چار سو اسّی بلین یوروز کی رقم کا امدادی پیکج منظور کیا تھا

دوسری جانب جرمن حکومت نے امداد کے ساتھ بینکوں کے لیے سخت شرائط کا اعلان بھی کردیا ہے جیسے کہ بینکوں کے سربراہان کی تنخواہ پانچ لاکھ یوروز سالانہ سے تجاوز نہ کرنا اور بحران سے باہر آنے تک ان کی مراعات پر پابندی۔ کوئی بھی بینک زیادہ سے زیادہ دس بلین یوروز کی رقم کے لیے حکومت سے رجوع کرسکتا ہے۔

Klimaterminal des Bio-Seehotels in Zeulenroda

ماحول کے تحفظ کے لیے سبز مکانی گیسوں کے اخراج میں کمی کے لیے یورپی یونین کے ممالک نے گزشتہ برس ایک پلان منظور کیا تھا

دریں اثناء لگزمبورگ منعقدہ یورپی ممالک کے وزرائے ماحولیات کے اجلاس میں اٹلی اورپولینڈ سمیت متعدد یورپی ممالک نے مالیاتی بحران کے پیشِ نظر سبزمکانی گیسوں کے اخراج میں کمی کرنے کے یورپی پلان پرنظرثانی کی درخواست کی ہے۔اٹلی اورپولینڈ کا موقف ہے کہ عالمی اقتصادی بحران نے صنعتوں کو بری طرح متاثرکیا ہےجس کی وجہ سے ماحولیاتی آلودگی کم کرنے کے یورپی پلان میں تبدیلی ضروری ہے۔

جرمن وزیر ماحولیات زیگمار گیبریئل نے اس سلسلے میں مالیاتی بحران کو محض ایک بہانے سے تعبیر کیا اور کہا کہ یہ کہنا غلط نہ ہو گا کہ یورپی یونین کا توانائی اورماحولیات کا پیکج یقینی طورپر یونین کا پہلا جامع سیاسی پلان ہے۔ یورپی یونین نے گزشتہ برس دسمبرمیں سبزمکانی گیسوں کے اخراج میں سن دو ہزار بیس تک بیس فی صد کمی کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔