1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

فن و ثقافت

لیڈی گاگا کے مداح صدر اوباما سے بھی زیادہ

پاپ گلوکارہ لیڈی گاگا سوشل نیٹ ورکنگ سائٹ فیس بک پر مداحوں کی تعداد کے لحاظ سے دنیا کی سب سے زیادہ معروف زندہ شخصیت بن گئی ہیں۔ فیس بک پر سب سے زیادہ فینز صرف مائیکل جیکسن کے ہیں، جن کا ایک برس قبل انتقال ہو چکا ہے۔

default

آن لائن سائٹ فیم کاؤنٹ کے ایک تحقیقی رپورٹ کے مطابق فیس بک پر لیڈی گاگا کے فینز کی تعداد گزشتہ روز تک ایک کروڑ چھ لاکھ تہتر ہزار چار سو چھہتر تھی۔ اس تحقیقی رپورٹ کے مطابق مداحوں کی اس تعداد کے ساتھ مجموعی طور پر لیڈی گاگا چھٹے جبکہ زندہ شخصیات میں پہلے نمبر پر آ گئی ہیں۔ اس فہرست میں آنجہانی مائیکل جیکسن چودہ ملین مداحوں کے ساتھ مشہور ترین شخصیت ہیں۔

Flash-Galerie Musik Sängerin Lady Gaga

لیڈی گاگا پرفارم کرتے ہوئے

مداحوں کی تعداد کے اعتبار سے فیس بک کے جو صفحات سر فہرست ہیں، ان میں ٹیکساس ہولڈیم پوکر کے کھیل کا صفحہ پہلے، مائیکل جیکسن دوسرے، مافیا وارز تیسرے، فیس بک چوتھے اور امریکی ٹی وی شو ’’فیملی گائے‘‘ پانچویں نمبر پر ہیں۔

فیس کاؤنٹ سائٹ سے وابستہ ڈینیئل دیالوو کے مطابق لیڈی گاگا کے مداحوں کی تعداد میں اس برس دوگنا اضافہ دیکھا گیا ہے۔ دیالوو کا کہنا ہے کہ فینز کی تعداد میں اضافے کو بنیاد مانا جائے، تو لیڈی گاگا کی شہرت میں سب سے زیادہ تیز رفتاری سے اضافہ ہو رہا ہے:’’دس ملین مداحوں کی موجودگی ایک ناقابل فراموش بات ہے۔ اس سے لیڈی گاگا اور فیس بک دونوں کی عوام تک غیر معمولی پہنچ کا اندازہ لگایا جا سکتا ہے۔‘‘

G20 Gipfel Proteste Toronto Obama Flash-Galerie

صدر اوباما کے مداحوں کی تعداد 95 لاکھ کے قریب ہے

لیڈی گاگا نے ابھی جمعے کے روز ہی اپنے ایک مختصر ویڈیو پیغام میں اپنے مداحوں کا شکریہ ادا کیا تھا۔ انہوں نے کہا تھا کہ مداحوں کی بدولت ہی وہ یہ عالمی ریکارڈ قائم کرنے میں کامیاب ہو پائی ہیں۔

اس فہرست میں امریکی صدر باراک اوباما اپنے پچانوے لاکھ مداحوں کے ساتھ لیڈی گاگا کے بعد سب سے اہم شخصیت ہیں۔

گزشتہ ہفتے فوربز میگزین نے بھی چوبیس سالہ لیڈی گاگا کو دنیا کی با اثر ترین شخصیات کی فہرست میں جگہ دی تھی۔ فوربز میں لیڈی گاگا کو جگہ ٹی وی، جریدوں اور انٹرنیٹ پر ان کی جلوہ گری سے انہیں حاصل ہونے والی 62 ملین ڈالر کی کمائی کے باعث دی گئی تھی۔

رپورٹ : عاطف توقیر

ادارت : امجد علی

DW.COM