1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

’لٹل ماسٹر‘ نہیں رہے، پاکستانی کرکٹ لیجنڈ حنیف محمد کا انتقال

’لٹل ماسٹر‘ کہلانے والے پاکستانی کرکٹ لیجنڈ حنیف محمد، جو پھیپھڑوں کے سرطان میں مبتلا چلے آ رہے تھے، کراچی کے ایک ہسپتال میں اکیاسی برس کی عمر میں انتقال کر گئے ہیں۔ اُنہیں جمعے کے روز کراچی ہی میں سپرد خاک کیا جائے گا۔

Pakistan Cricket Spieler Hanif Mohammad

دائیں ہاتھ سے کھیلنے والے حنیف محمد 1962ء میں ایک زور دار ہِٹ لگاتے ہوئے، اُن کی عمدہ کارکردگی نے پاکستان کو ٹیسٹ اسٹیٹس دلانے میں اہم کردار ادا کیا

دنیائے کرکٹ اپنے کیریئر کے دوران مختلف طرح کے ریکارڈ بنانے والے عظیم ’لٹل ماسٹر‘ کے انتقال پر افسردہ ہے۔ حنیف محمد کی سن 2013ء میں لندن میں سرجری ہوئی تھی اور اُنہیں حالت زیادہ خراب ہونے پر ابھی چند روز پہلے وینٹی لیٹر پر منتقل کر دیا گیا تھا۔ حنیف محمد کو تین ہفتے پہلے سانس لینے میں تکلیف کے باعث کراچی کے آغا خان ہسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔

جمعرات کو حنیف محمد کے انتقال کے حوالے سے شروع میں متضاد خبریں سامنے آئیں۔ اُن کے بیٹے شعیب محمد کے مطابق اُن کے والد بے ہوش ہو گئے تھے جبکہ اہلِ خانہ نے غلطی سے یہ سمجھا تھا کہ وہ انتقال کر گئے ہیں۔ تب ابھی حنیف محمد سانس لے رہے تھے لیکن بدستور وینٹی لیٹر پر تھے۔

Pakistan Cricket Spieler Hanif Mohammad

1954ء: حنیف محمد کے دورِ جوانی کی ایک تصویر

مقامی میڈیا کے مطابق حنیف محمد کی تدفین جمعہ بارہ اگست کو ہو گی اور اُن کی نمازِ جنازہ کراچی کی الہلال سوسائٹی کی مسجد نعمانی میں ادا کی جائے گی۔

حنیف محمد اکیس دسمبر 1934ء کو جونا گڑھ میں پیدا ہوئے تھے۔ اپنے کیریئر کے دوران اُنہوں نے 1952ء سے لے کر 1969ء تک پاکستان کے لیے پچپن ٹیسٹ میچوں میں حصہ لیا اور اِس دوران اُن کی رنز بنانے کی اوسط 48.98 رہی۔ اُنہوں نے پاکستان کے لیے بارہ سنچریاں بنائیں۔

پاکستان کے لیے ٹیسٹ اسٹیٹس کے حصول میں بھی دائیں ہاتھ سے کھیلنے والے بلے باز حنیف محمد کی عمدہ کارکردگی کا کردار کلیدی نوعیت کا رہا۔ پاکستان کو ٹیسٹ میچ کھیلنے کی اجازت کراچی کے جم خانہ کلب میں کھیلے گئے اُس چار روزہ میچ کے بعد ملی تھی، جس میں پاکستانی ٹیم نے دو سو ا ٹھاسی رنز کے ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے حنیف محمد کے شاندار چونسٹھ رنز کی مدد سے میرل بون کرکٹ کلب کے خلاف اپنا فرسٹ کلاس میچ جیت لیا تھا۔

کرکٹ کی تاریخ میں حنیف محمد کے وہ شاندار تین سو سینتیس رنز بھی یاد رکھے جائیں گے، جو اُنہوں نے پورے سولہ گھنٹے تک کھیلتے ہوئے برج ٹاؤن میں ویسٹ انڈیز کے خلاف بنائے تھے اور جن کی بدولت پاکستان یقینی شکست سے بچ پایا تھا۔ کرکٹ کی تاریخ میں یہ اب بھی کسی کھلاڑی کی طویل ترین اننگز ہے۔

حنیف محمد کو کسی فرسٹ کلاس اننگز میں انفرادی اسکور کا سر ڈان بریڈ مین کا بنایا ہوا ریکارڈ توڑنے کا بھی اعزاز حاصل ہے۔ تب وہ اپنی پانچویں سنچری اسکور کرنے کی کوشش میں 499 رنز بنا کر رن آؤٹ ہو گئے تھے۔ حنیف محمد کے اس ریکارڈ کو بالآخر پینتیس برس بعد ویسٹ انڈیز کے برائن لارا نے 1994ء میں توڑا تھا۔