1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

صحت

’لو کاربو ہائیڈریٹ‘ والی غذا زيادہ وزن کم کرتی ہے

لو فیٹ ڈائٹس یا کم چربی پر مشتمل غذا کا استعمال وزن کم کرنے میں اتنا مددگار ثابت نہیں ہوتا جتنا کہ سمجھا جاتا رہا ہے۔ یہ انکشاف کيا گيا ہے 53 مطالعاتی جائزوں پر مشتمل ایک تازہ رپورٹ ميں۔

اس رپورٹ کی مرکزی مصنفہ ڈائرڈ ٹوبیاس کا تعلق امریکی ریاست میسا چوسٹس کے ’’برگھام اینڈ ویمنز‘‘ ہسپتال سے ہے۔ وہ کہتی ہیں،’’سائنسی تحقیق وزن کم کرنے کی طویل المدتی حکمت عملی کے طور پر لو فیٹ یا کم چربی والی غذا کے استعمال کی حمایت نہیں کرتی۔‘‘

اس تحقیق میں دنیا کے متعدد ممالک کے قريب 70 ہزار بالغ افراد کو شامل کیا گیا اور ان کی کم چربی والی غذا اور اس غذا کے وزن کم کرنے کے عمل پر اثرات سے متعلق 53 مطالعاتی جائزوں پر نظر ثانی کے بعد یہ رپورٹ شائع کی گئی۔ ان مطالعاتی جائزوں کے نتائج سے پتہ چلا ہے کہ وزن کم کرنے کے عمل میں کم کاربو ہائڈریٹ یا نشاستہ دار غذا دراصل کم چربی والی غذا سے کہیں زیادہ موثر ثابت ہوتی ہے۔

ماہرین کے مطابق انہیں اپنی تحقیق کے دوران یہ پتہ چلا کہ ايک مخصوص عرصے کے دوران کھانے میں لو فیٹ یا کم چربی والی غذا کے استعمال سے محض 360 گرام یا 13 اونس وزن کم ہوا جبکہ اسی عرصے کے دوران ہائی فیٹ یا زیادہ فیٹ مگر لو کاربو ہائڈریٹ یا کم نشاستہ دار غذا کے استعمال سے قریب 1.15 کلوگرام یا 2.5 پونڈ وزن کم ہوا۔

اس تحقیق کے نتائج معروف طبی جریدے ’’دی لینسیٹ ڈائیبیٹیز اینڈ انڈوکرونولوجی‘‘ میں شائع ہوئے ہیں۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ وزن کم کرنے کے عمل میں کم نشاستہ دار غذا کم چربی والی غذا سے کہیں زیادہ موثر ثابت ہوتی ہے۔

فیٹ یا روغن والی غذا کو ایک عرصے سے وزن میں اضافے کا سبب سمجھا جاتا رہا ہے کیونکہ فیٹ کے ایک گرام میں کاربوہائڈریٹ کے ایک گرام کے مقابلے میں دو گنا کیلوریز موجود ہوتی ہیں۔ تاہم اس بارے میں سالوں سے سائنسی تحقیق جاری ہے اور اس کے نتائج ہمیشہ متنازعہ ہی رہے ہیں۔

ابھی گزشتہ ماہ ہی جریدے’’ سیل میٹابولزم‘‘ میں چھپنے والے ایک نسبتاً چھوٹے پیمانے کی اسٹڈی کے نتائج سے پتہ چلا تھا کہ موٹاپے کے شکار افراد فیٹ یا چربی کے استعمال میں کمی لا کر اپنا وزن کم کرنے میں کامیاب رہے۔ تاہم اس سلسلے میں کی جانے والی تازہ ترین ریسرچ سے پتہ چلا ہے کہ معاملہ اُلٹا ہے۔

رپورٹ کی مرکزی مصنفہ ڈائرڈ ٹوبیاس کے بقول،’’ غذا میں فیٹ یا چربی کے استعمال کو کم کرنے کے حالیہ مشوروں میں اُس سوچ کا عمل دخل ہے کہ کم چربی دار غذا کو ترک کرنے سے وزن تیزی سے کم کیا جا سکتا ہے‘‘۔ انہوں نے کہا ہے کہ وزن کم کرنے کے بارے میں کی جانے والی تازہ ترین ریسرچ کے نتائج تاہم اس سوچ کے بالکل بر عکس ثابت ہوئے ہیں۔ یعنی چکنی یا فیٹ سے بھرپور غذا کے استعمال کو ترک کرنے سے وزن اتنا کم نہیں ہوتا جتنا کے لو کاربو ہائڈریٹ یا کم نشاستہ دار غذا کے استعمال سے وزن اور موٹاپے میں کمی لائی جا سکتی ہے۔