لبنان کو ہتھیاروں کی فروخت کا ماحول سازگار ہے، فرانس | حالات حاضرہ | DW | 22.12.2016
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

لبنان کو ہتھیاروں کی فروخت کا ماحول سازگار ہے، فرانس

فرانسیسی وزیرخارجہ ژاں مارک ایغو نے جمعرات کے روز کہا ہے کہ فرانس کی جانب سے لبنان کو ہتھیار مہیا کرنے کے لیے حالات ساز گار ہیں۔ ہتھیاروں کی اس فراہمی کے لیے سرمایہ سعودی عرب فراہم کر رہا ہے۔

فرانسیسی وزیرخارجہ ایغو کے مطابق لبنان میں نئی حکومت کے قیام کے بعد اب بیروت کو فرانسیسی ہتھیار فراہم کیے جا سکتے ہیں۔ جمعرات کے روز لبنانی دارالحکومت بیروت میں صدر مِشیل عون اور وزیراعظم سعد الحریری سے ملاقاتوں کے بعد ایغو نے کہا کہ نئی لبنانی حکومت کے لیے یہ نہایت ضروری ہے کہ وہ سعودی عرب اور ایران کے ساتھ مکالمت اور بات چیت کا سلسلہ کھلا رکھے، تاکہ وہ شامی خانہ جنگی کے اثرات سے محفوظ رہے۔

لبنان میں نئی حکومت کے قیام کے بعد اپنے پہلے دورے میں فرانسیسی وزیرخارجہ ایغو نے صحافیوں سے بات چیت میں کہا، ’لبنان میں سورج پھر سے چمک رہا ہے اور حالات ساز گار ہیں۔‘‘

سعودی عرب نے لبنانی فوج کو فرانسیسی ہتھیاروں کی فراہمی سے متعلق تین ارب ڈالر کی ڈیل معطل کر دی تھی۔ سعودی عرب کو تشویش تھی کہ بیروت میں عبوری انتظامیہ شیعہ عسکری تنظیم حزب اللہ کے زیر اثر ہو سکتی ہے۔ یہ بات اہم ہے کہ حزب اللہ کو سعودی عرب کے حریف ملک ایران کی پشت پناہی حاصل ہے۔

Saad Hariri (picture-alliance/photoshot)

لبنان میں حال ہی میں ایک طویل وقفے کے بعد حکومت قائم ہو پائی ہے

سعودی عرب کی جانب سے لبنانی فوج کو جدید ہتھیاروں کی فراہمی کے لیے سرمایہ فراہم کرنے کی ڈیل لبنان کو جہادی گروہوں کے خلاف بہتر کارروائیاں کرنے کے لیے طے پائی تھی۔ ایغو نے بتایا کہ وہ لبنانی صدر عون کے ساتھ جلد ہی سعودی عرب کا دورہ کریں گے، تاکہ دونوں ممالک کے درمیان تعلقات میں بہتری لائی جا سکے۔

ایغو کا صحافیوں سے بات چیت میں کہنا تھا، ’’لبنان کو شامی تنازعے سے دور رکھنے کے لیے تمام ضروری اقدامات کیے جانا چاہییں۔‘‘

انہوں نے مزید کہا، ’’ہم چاہتے ہیں کہ لبنان تمام ہمسایہ ممالک بہ شمول سعودی عرب اور ایران کے ساتھ مکالمت جاری رکھے۔‘‘ یہ بات اہم ہے کہ شامی تنازعے میں ایران بشارالاسد حکومت کی حمایت کرتا ہے، جب کہ سنی باغیوں کو سعودی پشت پناہی حاصل ہے۔