1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

لبنان میں تشدد کے واقعات میں اضافے کے خطرات

لبنانی وزیر صنعت Pierre Gemayel کے قتل کے بعد لبنان میں نئے سرے سے تشدد کے واقعات کا خطرہ بڑھ گیا ہے۔ مقتول وزیر کو جمعرات کے روز بیروت میں سپردِ خاک کیا جا رہا ہے۔ اِس موقع پر ہزارہا شام مخالف مظاہرین کی موجودگی متوقع ہے۔

لبنان میں قتل ہونے والے وزیرِ صنعت Pierre Gemayel

لبنان میں قتل ہونے والے وزیرِ صنعت Pierre Gemayel

لبنان کے معاملات میں شام کی مداخلت کے سخت مخالف اور با اثر دروظ رہنما ولید جُنبلاط نے اس طرح کی مزید وارداتوں سے خبردار کیا ہے اور دیگر لبنانی سیاستدانوں ہی کی طرح پیئر جیمائیل کے قتل کا ذمہ دار شام کو قرار دیا ہے۔

اقوامِ متحدہ کے امن دَستے برائے لبنان میں شریک ممالک جرمنی اور فرانس نے بھی لبنان میں عدم استحکام کے خطرے سے خبردار کیا ہے۔

لبنانی وزیر اعظم فواد سنیورا نے قتل کی اِس ورادات کی تحقیقات کے سلسلے میں اقوامِ متحدہ سے مدد طلب کی تھی۔ اِس درخواست پر فوری ردعمل ظاہر کرتے ہوئے عالمی سلامتی کونسل نے بدھ کے روز فیصلہ کیا کہ وہ بین الاقوامی تحقیقاتی کمیشن، جو پہلے ہی مقتول لبنانی وزیر اعظم رفیق الحریری کے قتل کی تحقیقات کر رہا ہے، اب اِس مقتول وزیر کے قتل کی تحقیقات میں بھی تعاون فراہم کرے گا۔