1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

 لاپتہ بلاگر عاصم سعید بازیابی کے بعد بیرون ملک روانہ

خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق رواں ماہ کے اوائل میں لاپتہ ہونے والے پاکستانی بلاگر عاصم سعید کے گھر والوں کا کہنا ہے کہ وہ بخیریت گھر واپسی کے فوری بعد  ملک چھوڑ کر چلے گئے ہیں۔

Pakistan Demo vermisste Blogger (Getty Images/AFP/A. Ali)

پاکستانی حکومت اور ملک کے وفاقی تحقیقاتی ادارے نے لاپتہ پانچ سرگرم لبرل بلاگرز میں سے کسی ایک کو بھی حراست میں لینے سے انکار کیا تھا

خبر رساں ادارے روئٹرز  کے مطابق رواں ماہ کی چار تاریخ کو لاپتہ ہونے والے بلاگر عاصم سعید کے والد نے آج بروزِ اتوار بتاریخ 29 جنوری کو بتایا  ہےکہ اُن کے بیٹے کو سنگا پور سے اُن کی پاکستان آمد کے دوران ریاستی اداروں کی جانب سے حراست میں لیا گیا تھا تاہم روئٹرز سے گفتگو میں عاصم کے والد غلام حیدر  نے کسی ریاستی ادارے کا نام نہیں لیا۔

پاکستانی حکومت اور ملک کے وفاقی تحقیقاتی ادارے نے لاپتہ پانچ سرگرم لبرل بلاگرز میں سے کسی ایک کو بھی حراست میں لینے سے انکار کیا تھا۔ روئٹرز کا کہنا ہے کہ  پاکستانی فوج اور ریاستی اداروں نے اِس معاملے پر کوئی بھی سرکاری تبصرہ کرنے سے انکار کیا ہے۔ روئٹرز کے مطابق  پاکستانی فوج کے میڈیا ونگ نے  اتوار کے دن کی جانے والی ٹیلیفون کالز اور سوالات کا جواب نہیں دیا ہے۔

عاصم سعید کے والد غلام حیدر کا کہنا تھا کہ اُن کے بیٹے کو سوشل میڈیا کی ایک پوسٹ کی وجہ سے اٹھایا گیا جو ملکی خفیہ اداروں کے نزدیک قابلِ اعتراض تھی۔ غلام حیدر نے روئٹرز سے بات کرتے ہوئے کہا ،’’ میرا بیٹا نہ  تو کسی ادارے اور نہ ہی فوج اور حکومت کے خلاف ہے۔ اور وہ اسلام کے خلاف بھی نہیں۔ اُس کا رہا کر دیا جانا ہی اِس بات کا ثبوت ہے کہ وہ خود  پر عائد تمام الزامات سے بری ہو چکا ہے۔‘‘

غلام حیدر نے کہا کہ اُن کے بیٹے کو ایجنسی کی جانب سے صرف میڈیا کو انٹرویو نہ دینے کی ہدایت دی گئی ہے۔ غلام حیدر کے مطابق عاصم سعید سنگا پور یا جرمنی گئے ہوں گے۔ دوسری جانب خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق  بھی عاصم سعید کے گھر والوں کا کہنا تھا کہ عاصم محفوظ ہیں۔

vermisste Menschenrechtsaktivisten Pakistan

رواں ماہ کے آغاز میں سلمان حیدر کے علاوہ چار دیگر سوشل میڈیا ایکٹیوسٹ اور بلاگرز لاپتہ ہو گئے تھے

عاصم سعید کے ایک رشتہ دار نے نام  ظاہر نہ کرنے کی شرط پر اے ایف پی کو بتایا کہ عاصم نے اتوار کی صبح گھر والوں سے رابطہ کر کے بتایا ہے کہ وہ خیریت سے ہیں۔ عاصم سعید کی واپسی،  لاپتہ بلاگر اور پروفیسر سلمان حیدر اور ایک دوسرے بلاگر کی واپسی کے محض ایک روز بعد ہوئی ہے۔

خیال رہے کہ رواں ماہ کے آغاز میں سلمان حیدر کے علاوہ چار دیگر سوشل میڈیا ایکٹیوسٹ اور بلاگرز لاپتہ ہو گئے تھے۔ وقاص گورایا اور عاصم سعید چار جنوری کو لاہور سے لاپتہ ہوئے جب کہ احمد رضا نصیر سات جنوری کو شیخوپورہ سے غائب ہوئے۔ اس کے علاوہ لاپتہ ہو جانے والوں میں ثمر عباس بھی شامل ہیں، جو شیعہ مسلم برادری کے لیے سرگرم ہونے کے ساتھ ساتھ سول پروگریسیو الائنس پاکستان کے سربراہ بھی ہیں۔

DW.COM