1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

صحت

’لاطينی امريکی ملک زيکا وائرس کے سبب اسقاط حمل کی راہ ہموار کريں‘

اقوام متحدہ نے لاطينی امريکی ملکوں پر زور ديا ہے کہ زيکا وائرس کے تناظر ميں خواتين کو يہ حق ديا جائے کہ وہ اسقاط حمل کرا سکيں۔ دریں اثناء محققين کا کہنا ہے کہ يہ وائرس تھوک اور پيشاب کے ذريعے بھی پھيل سکتا ہے۔

لاطينی امريکی ملکوں کی حکومتوں کو بچوں کی پيدائش سے متعلق اپنے سخت قوانين ميں تبديلی لانی چاہيے۔ يہ بات اقوام متحدہ کے انسانی حقوق سے متعلق محکمے کے سربراہ رعد الحسين نے سوئٹزرلينڈ کے شہر جنيوا ميں جمعے کے روز کہی۔

لاطينی امريکی ملکوں ميں ايک عام سے بے ضرر بخار کے ساتھ ساتھ آج کل ’مائکروسيفلی‘ کے ممکنہ کيسز بھی بڑھتے جا رہے ہيں۔ اس کيفيت ميں مبتلا نومولود بچوں کے سر کافی چھوٹے ہوتے ہيں۔ موجودہ صورت حال اس قدر بگڑ چکی ہے کہ چند حکومتوں نے خواتين کو يہ تجويز بھی دی ہے کہ وہ حاملہ نہ ہوں۔

دريں اثناء زيکا وائرس کی وباء کا گڑھ مانے جانے والے ملک جنوبی امريکی ملک برازيل ميں قانونی طور پر اسقاط حمل کی اجازت صرف اسی صورت ہے کہ جب حاملہ خاتون جنسی زيادتی کا شکار بن کر حاملہ ہوئی ہو۔ يا پھر اگر اس کی جان کو خطرہ لاحق ہو اور جسے اسقاط حمل سے ٹالا جا سکے۔ نيوز ايجنسی ڈی پی اے کی رپورٹس کے مطابق لاطينی امريکی خطے کے کئی ديگر ملکوں ميں بھی اسی طرح کے قوانين نافذ ہيں۔

زيکا وائرس تھوک اور پيشاب کے ذريعے بھی پھيل سکتا ہے

زيکا وائرس تھوک اور پيشاب کے ذريعے بھی پھيل سکتا ہے

اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے کمشنر زید رعد الحسين نے مطالبہ کيا ہے کہ خواتين کے ايک صحت مند زندگی کے حق کو يقينی بنانے کے ليے ايسی پاليسيوں اور قوانين کو ختم کيا جانا چاہيے، جو ان کی ’ری پروڈکٹوو ہيلتھ سروسز‘ تک رسائی کی راہ ميں رکاوٹيں بنيں۔

دريں اثناء ريو ڈی جينيرو کے فيوکُروز نامی ايک ريسرچ سينٹر کے محققين نے امکان ظاہر کيا ہے کہ زيکا وائرس تھوک اور پيشاب کے ذريعے بھی پھيل سکتا ہے۔ يہ امر اہم ہے کہ جرمنی کے برنہارڈ نوخت انسٹيٹيوٹ فار ٹراپيکل ميڈيسن کے مطابق يہ حقيقت ہے کہ زيکا وائرس کے جراثيم پيشاب کے نمونوں ميں ديکھے جا سکتے ہيں۔

جرمن محققين پہلے بھی يہ کہہ چکے ہيں کہ اس وائرس کے آثار پيشاب اور تھوک ميں ملتے ہيں۔ تاحال البتہ يہ واضح نہيں کہ آيا يہ وائرس پيشاب اور لعاب کے ذريعے منتقل بھی ہو سکتا ہے يا نہيں۔