1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

 قطری حاجیوں کی سلامتی کے معاملے پر تشویش ہے، دوحہ

دوحہ حکومت نے فریضہ حج کی ادائیگی کے لیے سعودی عرب جانے والے قطری شہریوں کی سلامتی کے حوالے سے خدشات کا اظہار کیا ہے۔ سعودی حکومت نے قطری حاجیوں کے لیے سرحد کھولنے کا اعلان کیا تھا۔

قطر کے وزیر خارجہ شیخ محمد بن عبدالرحمان ثانی نے ناروے کے دورے کے دوران کہا ہے کہ اُن کے شہریوں کی سکیورٹی سے متعلق سعودی وزارت مذہبی اُمور سے کیے گئے سوالات کا جواب ابھی تک نہیں ملا۔

قطری وزیر خارجہ  نے ایک نیوز کانفرنس میں کہا،’’ دونوں ممالک کے درمیان بڑھتی ہوئی کشیدگی اور سعودی میڈیا کی حالیہ تنازعے میں رپورٹنگ کی زبان اور لب و لہجہ قطری عوام کے خلاف نفرت پھیلا رہے ہیں جس پر ہماری حکومت کو بہت تحفظات ہیں۔‘‘

قطری وزیر خارجہ نے کہا کہ اُن کے جو شہری اس وقت سعودی سرحد میں داخل ہو رہے ہیں ، اُن کی حفاظت کی ذمہ داری ریاض حکومت پر عائد ہوتی ہے۔

دوسری جانب سعودی ذرائع ابلاغ کے مطابق قطری حاجی زائرین  سعودی عرب پہنچنا شروع ہو گئے ہیں۔ سعودی عرب کے سرکاری ٹی وی کی نشریات میں بتایا گیا ہے کہ جمعرات کے روز سلوا بارڈر کے راستے ایک سو بیس قطری حاجی ملک میں داخل ہوئے۔

 گزشتہ روز سعودی فرمانروا شاہ سلمان نے قطر کے ساتھ اپنی سرحد کھولنے کے احکامات جاری کيے تھے۔ سلوا نامی سرحدی گزر گاہ کو پانج جون کو اس وقت بند کر ديا گيا تھا جب دہشت گردی کی حمايت کا الزام عائد کرتے ہوئے سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، مصر اور بحرين نے قطر کے ساتھ سفارتی تعلقات منقطع کر ديے تھے۔

DW.COM