1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

فن و ثقافت

قدیم چینی مصوری کا شاہکار، صدیوں بعد نمائش

چین کی انتہائی قدیم اور سب سے مشہور پینٹنگز میں سے ایک، جسے سترہویں صدی میں پھاڑ کر دو حصوں میں تقسیم کر دیا گیا تھا عنقریب ہی اپنی مکمل حالت میں تائیوان میں نمائش کے لیے پیش کر دی جائے گی۔

default

اس نمائش کا اہتمام کرنے والے ماہرین نے بتایا کہ گزشتہ 360 سال سے بھی زائد عرصے میں یہ پہلا موقع ہو گا کہ شائقین انتہائی تاریخی اہمیت کی حامل اس پینٹنگ کو اس کی مکمل حالت میں دیکھ سکیں گے۔

تائیوان کے دارالحکومت تائی پے سے موصولہ رپورٹوں کے مطابق اس تصویر کا نام ’’ فُوچون کے پہاڑوں میں رہتے ہوئے‘‘ ہے اور اس تصویر کی نمائش اگلے ہفتے شروع ہو جائے گی۔

Palast Museum in Taipei

تائی پے نے نیشنل پیلس میوزیم کی طرف سے بتایا کہ چین نے صدیوں پہلے پھاڑ دی جانے والی اس پینٹنگ کے دونوں حصے کچھ عرصہ قبل عارضی طور پر تائیوان کو مہیا کیے تھے، جہاں انہیں جوڑ کر ماہرین نے تصویر کو اُس کی اصلی حالت میں واپسی کو یقینی بنا لیا۔

نیشنل پیلس میوزیم کے ایک بیان کے مطابق گزشتہ 360 سال سے زائد عرصہ سے اس پھٹی ہوئی تصویر کے دونوں حصوں کو کبھی نمائش کے لیے پیش نہیں کیا گیا۔ یہ تصویر چین میں سن 1271 سے 1368 تک اقتدار میں رہنے والے یوآن شاہی خاندان کے دورے اقتدار میں بنائی گئی تھی۔

اس تصویر کو قدیم چین کے دور کے فنون لطیفہ سے متعلق اہم ترین شاہکاروں میں شمار کیا جاتا ہے اور اس تصویر کی نمائش دو جون سے لے کر پانچ ستمبر تک تائی پے میں کی جائے گی۔ امکان ہے کہ چین میں اس پینٹنگ کو اس کی موجودہ حالت میں نمائش کے لیے سرے سے رکھا ہی نہیں جائے گا۔

رپورٹ: عصمت جبیں

ادارت: امتیاز احمد

DW.COM

ویب لنکس