1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

قاہرہ میں بم حملہ، ایک فرانسیسی خاتون ہلاک

مصری دارالحکومت قاہرہ میں اتوار کی رات غیر ملکی سیاحوں کے پسندیدہ شہر کے ایک تاریخی حصے میں کئے گئے بم حملے میں کم ازکم ایک ہلاکت اور بائیس افراد کے زخمی ہونےکی تصدیق کر دی گئی ہے۔

default

پولیس نے متاثرہ علاقے کو فورا سر بمہر کردیا

سرکاری ذرائع کے مطابق یہ حملہ قاہرہ کے مشرقی حصے میں 14 ویں صدی میں تعمیر کی گئی خان الخلیلی نامی اس مارکیٹ کے نواح میں کیا گیا جہاں مصر جانے والے غیر ملکی سیاح بڑی تعداد میں جاتے ہیں۔

Anschlag in Ägypten

دھماکے کے بعد خوف کے عالم میں خان الخلیلی مارکیٹ سے رخصت ہوتے ہوئے غیر ملکی سیاح

حملے کے وقت بہت بڑی تعداد میں سیاح اس علاقے کے چائے خانوں اور ریستورانوں میں موجود تھے اور اس واقعے میں نامعلوم حملہ آوروں نے ایک بم کچھ فاصلے سے ان غیر ملکیوں کے عین وسط میں پھینکنے کی کوشش کی۔

مصری زرائع ابلاغ نے سرکاری بیان کو نقل کرتے ہوئے کہا ہے کہ دارلحکومت قاہرہ بم دھماکے کے نتیجے میں ایک فرانسیسی خاتون ہلاک جبکہ بائیس افراد زخمی ہو گئے ہیں۔ زخمی ہونے والوں میں ایک جرمن اور پندرہ فرانسیسی باشندے بتائے جا رہے ہیں۔ ابتدائی اطلاعات میں کہا گیا کہ اس بم دھماکے میں چار افراد ہلاک ہوئے تھے۔

مصر کی سرکاری خبر ایجنسی مینا نے عینی شاہدین کے حوالے سے بتایا ہے کہ اس حملے میں غیر ملکی سیاحوں کو نشانہ بنانے کے لئے ایک بم ایک قریبی ہوٹل کی چھت سے نیچے پھینکا گیا تھا جبکہ موقع پر موجود چند افراد نےاس سے مختلف بیانات دیتے ہوئے یہ دعویٰ بھی کیا کہ اس حملے میں ایک موٹر سائیکل پر سوار افراد نے غیر ملکی سیاحوں کے ہجوم پر دو دستی بم پھینکے جن میں ایک تو پھٹ گیا جبکہ دوسرے کو بعد ازاں بم ڈسپوزل سکواڈ نے ناکارہ بنا دیا۔