1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

فیفا کی انگلینڈ اور میکسیکو سے معافی

فٹ بال کی بین الاقوامی تنظیم فیفا کے صدر جوزف سیپ بلیٹر نے انگلینڈ اور میکسیکو سے پری کوارٹر فائنل مقابلوں میں ریفری کی جانب سے غلط فیصلوں پر معزرت کی ہے۔

default

فیفا کے صدر جوزیف سیپ بلیٹر کو بھی ریفری کی جانب سے غلط فیصلوں پر افسوس ہے

فٹ بال کی بین الاقوامی تنظیم فیفا کے صدر جوزف بلیٹر نے انگلینڈ اورمیکسیکو سے عالمی کپ کے پری کوارٹر فائنل مقابلوں میں ریفری کی جانب سے غلط فیصلوں پرمعذرت کی ہے۔ انگلنیڈ اور جرمنی کے میچ میں بال گول کے اندر ہونے کے باوجود گول نہیں دیا گیا تھا جبکہ ارجنٹائن کا میکسیکو کے خلاف پہلا گول آف سائڈ پوزیشن سے کیا گیا تھا۔

فیفا کے صدر جوزف بلیٹرکے مطابق اس طرح کے غلط فیصلوں کے امکانات کو ختم کرنے کے لئے فٹ بال کی عالمی تنظیم گول لائن ٹیکنالوجی متعارف کرانے کا سوچ رہی ہے اور اس سلسلے میں فیفا کے اگلے اجلاس میں بات چیت کی جائے گی۔ بلیٹر نے مزید کہا کہ غلط فیصلے کھیل کو متاثر کرتے ہیں اور ان پر افسوس بھی ہوتا ہے، تاہم اس وجہ سے مقابلے ختم نہیں کئے جاسکتے اور یہ کھیل ہی کا ایک حصہ ہے۔

NO FLASH Nicht gezähltes Tor England gegen Deutschland

انگلنیڈ اور جرمنی کے میچ میں بال گول کے اندر ہونے کے باوجود گول نہیں دیا گیا تھا

فیفا کے سربراہ کے مطابق انہوں نے فوری طور پر انگلینڈ اور میکسیکو میں فٹ بال کی قومی تنظیموں سے رابطے کر کے جنوبی افریقہ میں جاری عالمی کپ کے دوران غلط فیصلوں پر معافی مانگی ہے۔ انگلینڈ کی جانب سے تو شکریے کے ساتھ معافی قبول بھی کر لی گئی تاہم میکسیکو کی فٹ بال فیڈریشن نے ناک منہ چڑھا کر اسے تسلیم کیا ہے۔

فیفا کے صدر جوزف بلیٹر کے مطابق اس طرح کے مسائل کا واحد حل گول لائن ٹیکنالوجی ہے اور فیفا کی اگلی میٹنگ کا ایجنڈا بھی یہی ہو گا۔ ساتھ ہی ان کا یہ بھی کہنا تھا میکسیکو اور ارجنٹائن کے میچ کی اگرمثال لی جائے تو ارجنٹائن کی طرف سے گول کرنے والے کھلاڑی کے آف سائڈ ہونے کا بروقت پتہ چلانے میں گول لائن ٹیکنالوجی بھی کوئی کردار ادا نہیں کر سکے گی۔ لیکن جرمنی اور انگلینڈ کے میچ میں اس کے ذریعے فوری طور پر فیصلہ کیا جا سکتا تھا۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس بارے میں بھی سوچنا ہو گا کہ کھلاڑیوں کی جانب سے ہر احتجاج کو فوری طور پر قبول نہ کیا جائے ورنہ کھیل کا دورانیہ طویل ہو جائے گا اور ہر فیصلے پر اعتراضات کا سلسلہ شروع ہو جائےگا۔

جوزف بلیٹر نے کہا کہ کسی بھی فٹ بال میچ پر بہتر کنٹرول کے لئے اب تک کئی اقدامات کئے جا چکے ہیں اور آئندہ بھی کئے جاتے رہیں گے۔ مزید یہ کہ وہ یہ تو نہیں بتا سکتے کہ کون سی تبدیلیاں متعارف کرائے جانے کا منصوبہ ہے تاہم وہ یہ بات یقین سے کہہ سکتے ہیں کہ ’’فٹ بال میچوں میں آئندہ کچھ نہ کچھ ضرور بدلے گا۔‘‘

WM 2010 Weltmeisterschaft Argentinien gegen Mexiko

ارجنٹائن کا میکسیکو کے خلاف پہلا گول آف سائڈ پوزیشن سے کیا گیا تھا

فٹ بال کی عالمی تنظیم فیفا پر دباؤ ہے کہ وہ کرکٹ، رگبی اور ٹینس جیسے کھیلوں کی طرح ویڈیو ٹیکنالوجی کو استعمال کرتے ہوئے ریفری یا امپائرز کے غلط فیصلوں کو روکے۔ تاہم اس تنظیم کا کہنا ہے کہ اس سے کھیل پر منفی اثر پڑے گا اور میچ کے تسلسل میں رکاوٹیں پیدا ہوں گی۔

گزشتہ برس فرانس کے ایک کھلاڑی کی جانب سے ہینڈ بال کے ذریعے گول کرنے اور اب جنوبی افریقہ میں جاری فٹ بال کے عالمی کپ مقابلوں کے پری کوارٹر فائنل میچوں میں اسی طرح کے مزید غلط فیصلوں کے بعد فیفا پر بالآخر ویڈیو ٹیکنالوجی کے استعمال کے حوالے سے دباؤ میں مزید اضافہ ہو گیا ہے۔

رپورٹ: عدنان اسحاق

ادارت: مقبول ملک