1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

سائنس اور ماحول

فیس بک کی بدولت آپ کے ’دماغ میں تبدیلی‘

سائنسدانوں کی نئی تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر آپ کے دوستوں کی تعداد اور دماغ کے بعض حصوں کے حجم کا براہ راست تعلق ہے۔

default

نئی تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ سماجی رابطہ کاری کی مشہور ویب سائٹ فیس بک انسانوں کے دماغ پر اثر اندار ہوتی ہے۔ سائنسدانوں کے مطابق یاداشت، جذباتی تعلق اور سماجی رابطوں کے ضمن میں دماغ کے چار حصے استعمال ہوتے ہیں۔ سائنسدانوں کو اس تازہ تحقیق سے معلوم ہوا کہ جن لوگوں کے دماغ کے ان چار میں سے تین کا حجم زیادہ ہوتا ہے، فیس بُک پر ان لوگوں کے دوستوں کی فہرست طویل ہوتی ہے۔ تاہم یہ بات یقین سے نہیں کہی جا سکتی کہ فیس بک پر ’فرینڈز‘ یا دوستوں کی زیادہ تعداد دماغ کے مخصوص حصوں کے سائز میں اضافہ کرتی ہے یا نہیں۔ جو بات سائنسدانوں نے اس نئی تحقیق سے اخذ کی ہے وہ یہ ہے کہ فیس بک پر آپ کے دوستوں اور دماغ کے بعض حصوں کے سائز کا تعلق ضرور ہے۔

لندن یونی ورسٹی کے مشہور یونی ورسٹی کالج لندن یا یو سی ایل کی محقق ریوتا کنائی اس تحقیق پر کام کر رہی ہیں۔ ان کا کہنا ہے، ’’دلچسپ سوال اب یہ اٹھتا ہے کہ کیا ان حصوں کا اسٹرکچر وقت کے ساتھ تبدیل ہوتا ہے۔ اس سے ہمیں یہ بھی معلوم ہوگا کہ آیا انٹرنیٹ ہمارے دماغوں کو تبدیل کر رہا ہے یا نہیں۔‘‘

Symbolbild Kirche Internet Facebook Christen NEU

فیس بک کو عالمی سطح پر پزیرائی حاصل ہے اور اس کو استعمال کرنے والوں کی تعداد آٹھ سو ملین سے زیادہ ہے

کنائی اور ان کے ساتی ایم آر آئی تکنیک کا استعمال کرتے ہوئے ایک سو پچیس طالب علموں کے دماغ کا مطالعہ کر رہے ہیں۔ یہ تمام طالب علم فیس بک کو کثرت سے استعمال کرتے ہیں۔ اس مطالعے کو چالیس طالب علموں کے ایک اور گروپ کے ساتھ کراس چیک کیا جاتا ہے۔

تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ فیس بک پر دوستوں کی تعداد اور دماغ کے بعض حصوں کا آپس میں تعلق ہے۔ فیس بک پر دوستوں کی تعداد دماغ کے ’گرے میٹر‘ کہلائے جانے والی جھلی پر اثر انداز ہوتی ہے۔ ’گرے میٹر‘ کا عام زندگی میں آپ کے دوستوں کی تعداد سے بھی تعلق ہے۔

جن طالب علموں پر تحقیق کی گئی ہے ان کے فیس بک پر دوستوں کی عمومی تعداد تین سو ہے، جب کہ زیادہ تر کے فیس بک پر دوستوں کی تعداد ہزار کے لگ بھگ ہے۔

خیال رہے کہ سماجی رابطہ کاری کی ویب سائٹ فیس بک کو عالمی سطح پر پزیرائی حاصل ہے اور اس کو استعمال کرنے والوں کی تعداد آٹھ سو ملین سے زیادہ ہے۔

رپورٹ: شامل شمس ⁄ خبر رساں ادارے

ادارت: افسر اعوان

DW.COM

ملتے جلتے مندرجات