1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

فلڈ آن لائن: سیلابی علاقوں میں امدادی کارروائیاں اور انٹرنیٹ

پاکستان کے بد ترین سیلاب کے دوران امدادی کارروائیوں میں انٹر نیٹ بھی کسی سے پیچھے نہیں ہے۔ متاثرین سیلاب کی مدد میں مصروف سرکاری اور غیر سرکاری ادارے انٹر نیٹ پر سیلاب کے حوالے سے موجود معلومات سے بھرپور مدد لے رہے ہیں۔

default

متاثرین کے کیمپ کہاں کہاں ہیں؟ کن علاقوں میں امداد نہیں پہنچی؟ کون کون سی سڑکوں پر ٹریفک بند ہے، دریاؤں میں پانی کی سطح کیسی ہے؟ اگلے چوبیس گھنٹوں میں موسم کیسا رہے گا ؟ یہ ساری معلومات انٹر نیٹ کے ذریعے آسانی سے دستیاب ہو رہی ہیں۔

Flash-Galerie Pakistan Überschwemmung Flutkatastrophe Flüchtlinge Insel

سندھ کے علاقے میں ایک گھر کو سیلابی پانی نے چاروں طرف سے گھیر رکھا ہے

دور دراز کے سیلابی علاقوں میں پانی میں ڈوبے ہوئے انسانوں کی مدد میں مصروف کارکنوں کیلئے آپس میں میٹنگ کر کے اطلاعات کا تبادلہ کرنا آج کل ممکن نہیں رہا ہے۔ یہ کام بھی انٹرنیٹ ہی سے لیا جا رہا ہے ۔ پانی میں ڈوبے ہوئے اُن علاقوں میں، جہاں روایتی ڈاکیے یا تیز رفتار کوریئر سروس نہیں پہنچ سکتی، وہاں بھی بلیک بیری کا جاود سر چڑھ کر بو ل رہا ہے۔

امدادی سرگرمیوں میں شریک ایک غیر سرکاری تنظیم ایکشن ایڈ کے داؤد ثقلین بتاتے ہیں کہ ای میل کے ذریعے انہیں پتہ چل رہا ہے کہ کہاں امداد نہیں پہنچ سکی، کن علاقوں میں کونسی اشیاء کی ضرورت ہے اور امدادی سامان کیلئے کونسا راستہ اختیار کرنا بہتر ہے۔

پنجاب حکومت نے بھی سیلاب اور امدادی سرگرمیوں کے حوالے سے ایک خصوصی ویب سائٹ تیار کی ہے۔ پنجاب حکومت کے ایک اہلکار فواد سعید نے بتایا کہ امدادی اشیاء اور ان کی تقسیم کے حوالے سے تمام معلومات انٹر نیٹ پر فراہم کر دی گئی ہیں۔ ان کے مطابق اس عمل سے امداد کی تقسیم کے عمل کو مزید شفاف بنانے میں مدد ملے گی اور حکومت کی ساکھ بہتر ہو گی۔ www.pakreport.org نامی ایک ویب سائٹ بھی متاثرہ علاقوں کی معلومات ویب سائٹ کے ذریعے متعلقہ لوگوں تک پہنچا رہی ہے۔

Pakistan Überschwemmung Flutkatastrophe Flüchtlinge auf Fahrrad

سیلاب کے باعث سڑکوں کو بھی شدید نقصان پہنچا ہے

آج کل ای میلز کے ذریعے سیلاب زدگان کی امداد کیلئے عطیات بھی اکٹھے کئے جا رہے ہیں۔ سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر بھی سیلاب کا موضوع نمایاں ہے۔ فیس بک پر سیلاب کے حوالے سے درجنوں صفحات تشکیل پا چکے ہیں۔ کبھی کبھی یوں لگتا ہے کہ جیسے پاکستان میں آنے والے سیلاب نے ویب کے صفحات کو بھی گیلا کر دیا ہے۔ بلاگز، ای میل گروپوں اور چیٹ رومز، ہر جگہ سیلابی موضوعات زیرِ بحث ہیں۔

بعض لوگ سیلابی علاقوں کی صورتحال سے آگاہی حاصل کرنے کیلئے گوگل ارتھ سے بھی مدد لے رہے ہیں۔

رپورٹ: تنویر شہزاد ، لاہور

ادارت: امجد علی

DW.COM

ویب لنکس