1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

فلپائن میں انتخابات: ستر ہزار امیدوارمیدان میں

آج فلپائن میں تین مہینے کی انتخابی مہم کے بعد ووٹرز صدر کے علاوہ سترہ ہزار قومی اور مقامی امیدواروں کی قسمت کا فیصلہ کریں گے تاہم ملک کے حساس علاقوں میں پرتشدد واقعات رونما ہونے کی وجہ سے انتخابات متاثر ہو سکتے ہیں۔

default

عوامی جائزوں کے مطابق سابقہ خاتون صدر کوری اکینوکے بیٹے Benigno Aquino صدارتی انتخابات میں فیورٹ ہیں۔ کوئی دس سالوں تک صدر کے عہدے پر فائز رہنے والی گلوریا آریُو پر بدعنوانی کے الزامات کے بعد انہیں مستعفی ہونا پڑا تھا۔ ان انتخابات میں چالیس ملین ووٹر اپنا حق رائے دہی استعمال کریں گے۔

پچاس سالہ اکینو نے امید ظاہر کی ہے ان کی کامیابی کے ساتھ ملک میں ایک نیا سورج طلوع ہو گا۔ اکینو کے مرکزی حریفوں میں سابق صدر جوزف ایسٹرڈا اور پراپرٹی مینیجر مانی ولار شامل ہیں۔ دو مختلف اہم عوامی جائزوں کے مطابق اکینو کو اپنے حریفوں پر کافی زیادہ برتری حاصل ہے۔ ان جائزوں میں انتالیس سے بیالس فیصد لوگوں نے ان کے حق میں ووٹ دیا ہے۔

Wahl-Auszählungsmaschinen in den Philippinen

پہلی بار استعمال کیا جانے والا آٹومیٹک سسٹم

ان انتخابات میں ایک سب سے بڑا سوال یہ بھی ہے کہ ملک میں ووٹنگ کے لئے پہلی بار استعمال کیا جانے والا آٹومیٹک سسٹم ٹھیک طریقے سے کام کر سکے گا یا نہیں۔ فلپائن میں پیر کے دن، مقامی وقت کے مطابق صبح سات بجے تا شام چھ بجے تک پولنگ جاری رہے گی۔

ان انتخابات کی مہم کے دوران پر تشدد واقعات کو دیکھتے ہوئے کئی حساس علاقوں میں فسادات بھڑکنے کا خطرہ بھی ہے۔ اس لئے حساس علاقوں میں سیکیورٹی ہائی الرٹ کی گئی ہے۔ دریں اثناء کئی امیدواروں نے ووٹنگ سے قبل ہی دھاندلی کے الزامات عائد کرنا شروع کر دئے ہیں۔ دریں اثناء دن کے پہلے حصے میں پر تشدد واقعات بھڑکنے کے نتیجے میں کم ازکم چار افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

رپورٹ : عاطف بلوچ

ادارت :شادی خان سیف