1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

فلوریڈا کے نائٹ کلب میں فائرنگ، کم از کم دو ہلاک

امریکی ریاست فلوریڈا کے شہر فورٹ مائرز کے ایک نائٹ کلب میں فائرنگ کے نتیجے میں کم از کم دو افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ مقامی پولیس کے مطابق 14 سے 16 دیگر افراد زخمی بھی ہیں۔

خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق فائرنگ کا یہ واقعہ اتوار اور پیر کی درمیانی شب فورٹ مائرز میں واقع ’کلب بلو‘ کی پارکنگ میں پیش آیا۔

فورٹ مائرز کے پولیس ڈیپارٹمنٹ کی طرف سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق مقامی وقت کے مطابق شب 12:30 کے فوری بعد پیش آنے والے اس واقعے کے بعد پولیس کو ’’متعدد افراد زخمی حالت میں ملے جنہیں گولیاں لگی ہوئی تھیں۔‘‘ اس بیان کے مطابق ان میں معمولی زخمی ہونے والوں سے لے کر شدید زخمی افراد بھی شامل ہیں۔

ایک مقامی ٹیلی وژن کے مطابق جب فائرنگ ہوئی تو اس کلب میں ٹین ایجرز کی ایک پارٹی ہو رہی تھی۔ پولیس کے مطابق تین افراد کو تفتیش کے لیے حراست میں لیا گیا ہے۔ تحقیقات کے لیے متاثرہ علاقے کی سڑکیں بند کر دی گئی ہیں تاہم پولیس کے مطابق اب یہ علاقہ ’محفوظ معلوم ہوتا ہے‘‘۔

امریکی تاریخ میں ’فائرنگ کا ایک بدترین واقعہ‘، پچاس ہلاک

خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق فورٹ مائرز پولیس ڈیپارٹمنٹ کے کپٹن جِم مُلیگان کا کہنا تھا کہ پیر کی علی الصبح 17 افراد فائرنگ کا نشانہ بنے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ تین افراد کو حراست میں لیا گیا ہے جبکہ فائرنگ دو مختلف جگہوں پر ہوئی۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق نائٹ کلب کے قریب ایک گھر اور گاڑیوں پر بھی فائرنگ کی گئی جس کی وجہ سے ایک شخص معمولی زخمی ہوا۔

امریکی ریاست فلوریڈا ہی کے شہر اورلینڈو کے ایک نائٹ کلب میں چھ ہفتے قبل یعنی 12 جون کو ہونے والی فائرنگ کے نتیجے میں 49 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔ ایک تنہا شخص کی طرف سے یہ امریکا کی حالیہ تاریخ کا بد ترین فائرنگ کا واقعہ تھا۔ تین گھنٹے تک جاری رہنے والی کارروائی کے بعد پولیس نے افغان نژاد امریکی شہری عمر متین کو ہلاک کر دیا تھا۔

دہشت گرد گروپ داعش نے 29 سالہ عمر متین کو ’خلافت کا ایک سپاہی‘ قرار دیتے ہوئے اس کی ذمہ داری قبول کی تھی۔ تاہم امریکی حکام کا کہنا تھا کہ بظاہر یہ شخص آن لائن جہادی پراپیگنڈا کے سبب شدت پسندی پر مائل ہوا تھا۔