1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

فلوریڈا: مسجد کے امام کو عدالت میں پیش کرنے کا حکم

طالبان کی امداد کرنے کے الزام میں گرفتار امریکی ریاست فلوریڈا کی ایک مسجد کے امام اور ان کے بیٹے کو اگلے ہفتے عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔

default

امام حافظ محمّد شیر علی خان پر طالبان کی مالی امداد کرنے کا الزام ہے

چھہتر سالہ امام حافظ محمّد شیر علی خان تئیس مئی کو امریکی فیڈرل کورٹ میں پیش ہوں گے۔ خان پاکستان میں پیدا ہوئے تھے۔ خان کے علاوہ ان کے چوبیس سالہ بیٹے اظہار خان کو بھی عدالت میں پیش ہونے کا حکم دیا گیا ہے۔ اظہار خان بھی ایک دوسری مسجد کے امام ہیں۔

یہ دونوں امریکی شہری ہیں۔ ان کو ہفتے کے روز گرفتار کیا گیا تھا۔ عدالت میں پیشی تک یہ دونوں باپ بیٹے زیرِ حراست رہیں گے۔

NO FLASH Symbolbild USA Osama bin Laden

بن لادن کی ہلاکت کے بعد پاکستان اور امریکہ کے تعلقات میں تناؤ ہے

امام حافظ اور ان کا بیٹا ان چھ افراد میں سے ہیں جن پر پاکستان پیسے بھیج کر طالبان کی مدد کرنے کا الزام ہے۔ چھ میں سے تین افراد حافظ خان کے خاندان ہی سے تعلق رکھتے ہیں۔ حافظ خان کے وکیل کا کہنا ہے کہ ان کے مؤکل بے قصور ہیں۔

حافظ خان کے انیس سالہ پوتے عالم زیب پر بھی طالبان کی امداد کا الزام ہے۔ پاکستانی حکّام کا کہنا ہے کہ انہوں نے اس حوالے سے عالم زیب سے تفتیش شروع کردی ہے۔ زیب اور اس کے اہلِ خانہ پاکستان کے شمال مغربی علاقے سوات میں رہتے ہیں۔ زیب نے عسکریت پسندوں کے ساتھ روابط کی تردید کی ہے۔

حافظ خان کے وکیل کا کہنا ہے کہ وہ اپنے مؤکل کو صحت کی خرابی کی بنیاد پر ضمانت دلوانا چاہتے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ حافظ خان کی طبیعت بڑھاپے کی وجہ سے خراب رہتی ہے۔

یہ واقعہ ایک ایسے وقت رونما ہوا ہے جب پاکستان میں اسامہ بن لادن کی ہلاکت کے بعد پاکستان اور امریکہ کے تعلقات تناؤ کا شکار ہیں۔

رپورٹ: شامل شمس⁄ خبر رساں ادارے

ادارت: ندیم گِل

DW.COM