1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

فرنچ اوپن میں اطالوی خاتون کی تاریخ ساز جیت

اٹلی کی فرانسیسکا شیاوونے آسٹریلیا کی سمانتھا سٹوسرکو فرنچ اوپن کے فائنل میں شکست دے کر ٹینس کا کوئی بھی گرینڈ سلیم جیتنے والی پہلی اطالوی خاتون بن گئی ہیں۔

default

پیرس میں کھیلے گئے فائنل مقابلے کو دیکھنے کے لئے بڑی تعداد میں اطالوی شائقین پہنچے ہوئے تھے جنہوں نے اپنی ہم وطن کھلاڑی کو خوب داد دی۔ یہ تاریخی اعزاز پاتے ہی سکیا وونے زمین پر لیٹ گئیں اور کورٹ کی سرخ مٹی کو بوسہ دیا اور پھر سٹینڈز پر چڑھ کر اپنے مداحوں میں جاکر ان سے گلے ملیں۔

سیمی فائنل جیتنے پر جب انہیں ٹینس کے گرینڈ سلیم فائنل میں پہنچنے والی پہلی خاتون اطالوی کھلاڑی ہونے کا اعزاز حاصل ہوا تھا جب بھی انہوں نے زمین کو بوسہ دیا تھا۔

French Open 2010 Damen-Finale

سمانتھا سٹوسر

 فرنچ اوپن کی ٹرافی وصول کرنے کے بعد انہوں نے اطالوی صدر Giorgio Napolitano سے ٹیلی فون پر مختصر بات بھی کی۔ اٹلی میں فٹبال کا جنون پایا جاتا ہے مگر اب امکان ظاہر کیا جارہا ہے کہ ٹینس کا شوق بھی وہاں پروان چڑھے گا۔   

عالمی نمبر 17 سکیا وونے کی جیت کا سکور 6-4 اور 7-6 رہا۔ فرنچ اوپن کے خواتین سنگل مقابلوں کی اس چیمپئن نے فائنل مقابلے میں بہت ہوشیاری سے اپنا کھیل پیش کیا۔ اپنی حریف سمانتھا سٹاؤسا کی تیز سروس کے مقابلے میں فرانشیسکا نے جوابی شارٹس میں گیند کو نیٹ سے ٹکرا کر سٹاؤسا کے کورٹ میں پھینکتی رہیں جس سے سٹاؤسا خاصی مشکلات کا شکار ہوئیں۔ سمانتھا سٹوسر کے شارٹس کا بھی سکیاوونے اپنے کورٹ میں نہایت چابک دستی سے جواب دیتی رہیں اور کسی بھی موقع پر ان کی گرفت کھیل پر کمزور ہوتی دکھائی نہیں دی۔

سکیاوونے نے فرنچ اوپن کے فائنل میچ تک رسائی کے دوران اہم ترین کامیابی عالمی نمبر تین کیرولین ووصنیاکی کو شکست دے کر حاصل کی تھی۔ اس29 سالہ چیمپئن نے ٹرافی وصول کرنے کے بعد کہا: ٫٫ میری جیت سے ثابت ہوتا ہے کہ ہر کوئی وہ کچھ کرسکتا ہے جو وہ کرنا چاہتا ہے، یہی میرے ساتھ بھی ہوا ہے۔‘‘

Frankreich French Open Tennis Finale 2010 Frauen

اطالوی کھلاڑی زمین کو بوسہ دیتے ہوئے

فائنل مقابلہ ہارنے والی سمانتھا سٹاؤسا اس حتمی مقابلے سے قبل سیرینا ولیمز اور جسٹن ہینن جیسے نامور کھلاڑیوں کو شکست دے چکی تھیں۔

سٹاؤسا بھی اگر فائنل جیتنے میں کامیاب ہوجاتیں تو وہ تیس سال بعد گرینڈ سلیم جیتنے والے آسٹریلیوی خاتون کا اعزاز حاصل کرجاتیں۔ سٹاؤسا فائنل مقابلے کی فیورٹ بھی سمجھی جارہی تھیں تاہم وہ اپنے مداحوں کی امیدوں پر پوری نہ اترسکیں۔

رپورٹ : شادی خان سیف

ادارت : افسر اعوان

DW.COM