1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

فرانس: گاڑی فوجیوں پر چڑھ دوڑی، چھ زخمی

فرانسیسی دارالحکومت پیرس کے ایک نواحی علاقے میں ایک گاڑی فوجیوں پر چڑھ دوڑی جس کے نتیجے میں چھ فوجی زخمی ہو گئے۔ پولیس ترجمان کے مطابق دو فوجیوں کی حالت تشویشناک ہے۔

جرمن خبر رساں ادارے ڈی پی اے کے مطابق فوجیوں کو زخمی کرنے والی گاڑی کا ڈرائیور بعد ازاں وہاں سے فرار ہو گیا۔ پیرس پولیس کی طرف سے ایک ٹوئیٹر پیغام میں کہا گیا ہے کہ پیرس کے مضافاتی علاقے لووا لووا پیرے اور اس کے قریبی علاقوں میں ایک گاڑی کو تلاش کیا جا رہا ہے۔

فرانسیسی میڈیا کے مطابق زخمی ہونے والے چھ افراد وہ فوجی ہیں جو آپریشن سینٹینیلے میں شریک تھے۔ اس آپریشن کے تحت فرانسیسی فوجی پیدل ہی مختلف مقامات پر گشت کرتے ہیں۔ یہ آپریشن 2015ء کے پیرس حملوں کے بعد اس طرح کے کسی دہشت گردانہ حملے سے بچاؤ کے لیے شروع کیا گیا تھا۔

مقامی میئر نے نشریاتی ادارے BFMTV کو بتایا کہ مذکورہ گاڑی پہلے سے وہاں موجود تھی اور جیسے ہی فوجی بیرک سے باہر نکلے یہ ان پر چڑھ دوڑی۔ میئر پیٹرک بولکانش کے مطابق، ’’بغیر کسی شک وشبے کے یہ جان بوجھ کر کیا گیا عمل ہے۔‘‘

فرانس میں رواں برس انفرادی حملوں میں کئی مرتبہ سکیورٹی فورسز کو نشانہ بنایا جا چکا ہے۔ رواں برس اپریل میں پیرس کی شہرہ آفاق سڑک شانز الیزے پر ایک ایسے شخص نے فائرنگ کر کے ایک پولیس اہلکار کو ہلاک کر دیا تھا جو طویل مجرمانہ ریکارڈ رکھتا تھا اور تفتیش کاروں کے مطابق اس کے اس عمل کا مقصد دہشت گردی تھا۔

Paris Angriff auf Soldaten im Stadtteil Levallois-Perret (Reuters/B. Tessier)

پولیس کے مطابق پیرس کے مضافاتی علاقے لووا لووا پیرے اور اس کے قریبی علاقوں میں ایک گاڑی کو تلاش کیا جا رہا ہے

اس کے علاوہ پولیس اہلکاروں اور فوجیوں پر شانز الیزے، لوورے میوزیم اور نوٹرے ڈیم کیتھیڈرل کے باہر ناکام حملے بھی کیے گئے۔ ہفتہ پانچ اگست کو ایفل ٹاور کے قریب ایک سکیورٹی چیک پوائنٹ پر ایک چاقو بردار شخص کو گرفتار کیا گیا تھا۔ انسداد دہشت گردی سے متعلق تفتیش کار بھی اس معاملے کی تحقیقات کر رہے ہیں۔ مذکورہ شخص کو نفسیاتی امراض کے ہسپتال بھیج دیا گیا تھا جہاں وہ قبل ازیں زیر علاج رہا تھا۔