1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

مہاجرین کا بحران

فرانس: کیلے میں دو مہاجر گروپوں میں جھڑپیں، دس افراد زخمی

فرانس میں مقامی حکام کا کہنا ہے کہ شمالی ساحلی شہر کیلے میں دو حریف مہاجر گروپوں کے درمیان ہونے والی جھڑپوں میں دس افراد زخمی ہو گئے ہیں۔ کیلے اب بھی برطانیہ جانے کے خواہشمند تارکینِ وطن کے لیے مرکزِ کشش بنا ہوا ہے۔

Oromos in Calais refugee Camp (DW/T.Waldyes )

گزشتہ سال اکتوبر میں کیلے کے مہاجر کیمپ کو مکمل طور پر خالی کرا لیا گیا تھا

کیلے میں مقامی حکام نے بتایا ہے کہ  پیر اور منگل کی درمیانی شب جنگل کے نام سے مشہور کیلے کے مہاجر کیمپ کے قریب ایک صنعتی علاقے میں تارکینِ وطن کے دو گروپوں کے مابین لڑائی شروع ہوئی۔

گزشتہ سال اکتوبر میں کیلے کے مہاجر کیمپ کو مکمل طور پر خالی کرا لیا گیا تھا۔ اس عارضی مہاجر کیمپ میں ہزاروں کی تعداد میں مہاجرین آباد تھے، جن میں سے زیادہ تر برطانیہ جانے کے خواہشمند تھے۔ فلاحی تنظیموں کے مطابق تاہم 400 کے لگ بھگ تارکینِ وطن اب بھی وہان قیام پذیر ہیں۔

 فرانسیسی سیکیورٹی حکام نے مداخلت کرتے ہوئے لڑائی میں ملوث مہاجرین کو الگ کرنے کی غرض سے آنسو گیس کا استعمال کیا۔ لڑنے والے دونوں گروپوں میں زیادہ تر اریٹیریا اور ایتھوپیا کے پناہ گزین شامل تھے۔ حکام کا کہنا ہے کہ 20 کے قریب نابالغ افراد کو مہاجرین کے لیے قائم کیے گئے استقبالیہ مراکز بھیج دیا گیا ہے۔

اس کیمپ میں موجود مہاجرین اور تارکین وطن کو ملک بھر میں بنائے گئے مختلف استقبالیہ سینٹرز میں منتقل کیا گیا تھا۔  فرانسیسی حکام پہلے بھی اس کیمپ کو خالی کرانے کی متعدد کوششیں کر چکے تھے لیکن انہیں اس مقصد میں کامیابی نہیں مل سکی تھی۔

 اس کیمپ میں آباد زیادہ تر مہاجرین کا تعلق افغانستان اور افریقی ممالک سے تھا۔ اطلاعات کے مطابق چھ تا آٹھ ہزار مہاجرین اور تارکین وطن نے اس کیمپ میں بسیرا کر لیا تھا۔

DW.COM