1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

مہاجرین کا بحران

فرانس: مہاجرین کے درمیان جھڑپ، سولہ زخمی

فرانسیسی شہر کیلے میں مہاجرین کے دو گروپوں کے درمیان تلخ کلامی کے بعد شروع ہونے والی لڑائی کے نتیجے میں دونوں گروپوں کے ایک درجن سے زائد افراد زخمی ہو گئے ہیں۔

فرانسیی بند گاہی شہر کیلے میں آپس میں الجھنے والے مہاجرین گروپوں کا تعلق افریقی ممالک سے بتایا گیا ہے۔ یہ لڑائی ہفتہ یکم جولائی کی شام میں ہوئی۔ لڑنے والے مہاجرین کا تعلق اریٹیریا اور ایتھوپیا سے بتایا گیا ہے۔ مہاجرین نے اس لڑائی میں ہر وہ چیز استعمال کی جو اُن کے ہاتھ میں آئی۔ اس لڑائی کو روکنے میں فرانسیسی پولیس کو مداخلت کرنی پڑی تھی

Calais Flüchtlingslager (DW/T.Waldyes )

کیلے میں ایک مہاجر کا خیمہ

۔

مہاجرین نے پتھر اور دستیاب درختوں کی شاخوں کا بے دریغ استعمال کیا۔ اِس  کھلی لڑائی میں فریقین کے کم از کم سولہ افراد زخمی ہوئے ہیں۔ سات مہاجرین کو شدید چوٹیں آئی ہیں جبکہ بقیہ نو افراد ہلکی نوعیت کے زخمی ہوئے ہیں۔ شدید زخمیوں کو ہسپتال پہنچا دیا گیا اور دوسرے مرہم پٹی کے بعد فارغ کر دیے گئے ہیں۔

نیوز ایجنسی اے ایف پی کے مطابق دونوں مہاجر گروپوں کے درمیان ہفتے کی شام تلخ کلامی اُس وقت شروع ہوئی جب وہ خوراک تقسیم کرنے والے ایک علاقے میں پہنچے۔ ابتداء میں یہ ہلکی پھلکی بحث تھی جو بتدریج تلخ ہوتی چلی گئی۔ مقامی انتظامیہ نے اندازہ لگایا ہے کہ خوراک پہلے لینے کے معاملے پر امکاناً یہ لڑائی ہو سکتی ہے۔ یہ امر اہم ہے کہ ان مہاجرین کے ذہنوں میں اریٹیریا اور ایتھوپیا کی سیاسی، سماجی اور معاشی چپقلش کی موجودگی بھی تلخی کا باعث ہو سکتی ہے۔

یہ امر اہم ہے کہ چند ماہ قبل تک کیلے کا مقام مہاجرین کے ہجوم کی وجہ سے غیر معمولی شہرت رکھتا تھا۔ اُس وقت اس شہر کے ایک حصے میں جنگل کے نام سے مشہور ایک مہاجر بستی تھی اور اُس میں دس ہزار افراد انتہائی مشکل حالات میں گزارا کرتے تھے۔ سابق صدر فرانسوا اولانڈ کے دور میں یہاں کے مہاجرین کو فرانس کے مختلف مقامات پر منتقل کر دیا گیا تھا۔

آج کل پھر سے کیلے میں مہاجرین نے جمع ہونا شروع کر دیا ہے اور ان ایام میں چار سو سے پانچ سو کے درمیان مہاجرین نے وہاں ڈیرے ڈالے ہوئے ہیں۔ ان کی کوشش ہے کہ وہ کسی طرح انگلش چینل کی سمندری گزرگاہ کو عبور کر کے برطانیہ پہنچ جائیں۔