1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

مہاجرین کا بحران

فرانس ميں مہاجرين کے ليے تربيت اور ملازمت کے مواقع

فرانس ميں ايک تربيتی پروگرام کی بدولت درجنوں مہاجرين پيشہ وارانہ تربيت کے بعد ملازمت حاصل کر چکے ہيں اور حکام کی کوشش ہے کہ اب اس منصوبے کو آگے بڑھايا جائے۔ اسکيم سے مستفيد ہونے والوں ميں پاکستانی مہاجرين بھی شامل ہيں۔

اس منصوبے کی کامياب آزمائش کے بعد فرانسيسی حکومت نے اعلان کيا ہے کہ کيمپوں ميں بسنے والے ايک ہزار تارکين وطن کو رواں برس ستمبر ميں اس پروگرام کا حصہ بننے کا موقع فراہم کيا جائے گا۔ فرانس ميں جاری اس پروگرام کی بدولت ان صنعتوں اور شعبوں کی مدد کی جا رہی ہے، جنہيں ملازمين کی کمی کا سامنا ہے۔ اس وقت وہاں تعميرات، انڈسٹری اور سروسز سيکٹرز کو يہ صورتحال درپيش ہے۔ تربيت کے ليے چنے جانے والے تارکين وطن کو پہلے چھ يا پھر نو ماہ کی باقاعدہ ٹريننگ دی جائے گی اور پھر وہ ملازمت کر سکيں گے۔

اس منصوبے کے آزمائشی پروگرام ميں فرانس کے دو مختلف علاقوں سے تعلق رکھنے والے 180 مہاجرين کو مواقع فراہم کيے گئے تھے۔ ان ميں سوڈانی، افغان اور پاکستانی تارکين وطن سر فہرست تھے۔ شرکاء کو پہلے فرانسيسی زبان کی تربيت دی گئی اور پھر مطلوبہ کام کے ليے ان کی پيشہ وارانہ صلاحيت بڑھانے کے ليے تشکيل دی گئی خصوصی ٹريننگ بھی دی گئی۔ بعد ازاں ان مہاجرين کو تربيت کی کامياب تکميل پر تعميراتی کام، رنگ کرنے وغيرہ جيسی ملازمتيں فراہم کی گئيں۔ علاوہ ازيں اس خصوصی حيثيت کے سبب نہ صرف ان کی سياسی پناہ کی درخواستوں پر کارروائی ميں تيزی لائی گئی بلکہ انہيں منتظم کمپنی کی جانب سے رہائش بھی فراہم کی گئی اور کھانا پينا بھی۔

اس منصوبے کا نام پائلٹ رکھا گيا ہے اور اس کا مقصد رہائش، ملازمت اور ديگر سہوليات کی فراہمی ممکن بنا کر مہاجرين کا سماجی انضمام اور انہيں ملازمت فراہم کرنا ہے۔ اسے شمالی فرانس سے سامنے آنے والے مطالبات کے بعد FAF-TT نامی کمپنی نے شروع کيا ہے۔

ویڈیو دیکھیے 01:42

پاکستانی مہاجر چند روز کے ليے جرمن پارليمان کا اعزازی رکن

 

Audios and videos on the topic