1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

فرانس روس کو جنگی بحری جہاز فروخت کرے گا

فرانس، روس کے ہاتھ ایک جدید ترین لڑاکا بحری جہاز کی فروخت پر راضی ہو گیا ہے۔ فرانسیسی محکمہء دفاع کے کے مطابق اس جنگی بحری جہاز کے علاوہ فرانس ایسے مزید تین جہاز بھی روس کے لئے تیار کرے گا۔

default

یہ پہلا موقع ہے کہ جب مغربی دفاعی اتحاد نیٹو کا کوئی رکن ملک روس کے ساتھ ایسے کسی معاہدے پر راضی ہوا ہے۔ اب تک یہ اطلاعات سامنے نہیں آئیں کہ 23 ہزار ٹن وزنی یہ بحری جہاز فرانس کہاں تیار کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔ دفاعی مبصرین کے مطابق اس جہاز کے حصول کے بعد روس کی بحری حربی طاقت میں نمایاں اضافہ ہوگا۔ اِس سودے پر سابقہ سوویت ریاستوں بشمول جورجیا کو سخت تحفظات ہو سکتے ہیں۔ روس اور جورجیا کے مابین سن 2008ء میں ایک مختصر جنگ ہو چکی ہے۔

فرانسیسی صدر نکولا سارکوزی نے روس کے لئے اِس جہاز کی تیاری کی منظوری دے دی ہے تاہم فرانسیسی اسلحہ ایجنسی Jacques de Lajugie کے مطابق روسی بحریہ نے مزید تین جہازوں کی تیاری کی بھی درخواست دی ہے۔ ابھی یہ واضح نہیں ہو سکا کہ آیا فرانس ایسے مزید تین جہاز روس کو فروخت کرنے کے لئے تیار ہے یا نہیں۔

Robert Gates Washington USA

امریکی وزیردفاع نے اس ڈیل پر اپنے تحفظات ظاہر کئے ہیں

پانچ سو ملین یورو کی لاگت سے تیار ہونے والے اس بحری جنگی جہاز میں ہیلی کاپٹروں، گاڑیوں، ٹینکوں اور فوجی دستوں کے تیز رفتار نقل وحمل کے علاوہ بھرپور حربی صلاحیت ہوگی۔

روس اور فرانس کے درمیان اس معاہدے پر نیٹو کے دیگر ممالک نے اپنے تحفظات ظاہر کئے ہیں۔ ان ممالک کو خدشہ ہے کہ یہ جہاز نیٹو کے رکن ممالک کے خلاف بھی استعمال ہو سکتے ہیں۔ فرانس کے دورے پر گئے امریکی وزیر دفاع رابرٹ گیٹس نے پیرس میں اپنے ایک بیان میں کہا کہ اس ڈیل پر امریکہ کی نظر میں کئی طرح کے سوالات ہیں۔

رپورٹ : عاطف توقیر

ادارت : امجد علی