1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

فرانسیسی وزیر داخلہ برونو لی رُو مستعفی ہو گئے

فرانسیسی وزیر داخلہ برونو لی رُو نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے۔ لی رُو کے بقول ان کا معاملہ اسی طرح کے ایک اسکینڈل کا شکار صدارتی امیدوار فرانسوا فیوں کے معاملے جیسا نہیں ہے۔

Frankreich Innenminister Bruno le Roux am Pariser Flughafen Orly (picture-alliance/AP Photo/K. Zihnioglu)

برونو لی رُو

پیرس سے منگل اکیس مارچ کی شام ملنے والی مختلف نیوز ایجنسیوں کی رپورٹوں کے مطابق ملکی وزیر داخلہ برونو لی رُو نے یہ استعفیٰ اپنی دو نوجوان بیٹیوں کو اپنی ہی پارلیمانی معاونین کے طور پر ملازمت دینے کے سلسلے میں آج ہی شروع ہونے والی باقاعدہ لیکن ابتدائی تفتیش کے نتیجے میں دیا۔

فرانس: صدارتی امیدوار مارین لے پین کی پارلیمانی مامونیت ختم

مارین لے پین پر متنازعہ فلم، کیا ووٹرز کی رائے متاثر ہو گی؟

’جاگ یورپ جاگ!‘، انتہائی دائیں بازو کی فرانسیسی لیڈر لے پین

تاہم برونو لی رُو نے زور دیا کہ انہوں نے کسی قانون کی خلاف ورزی نہیں کی اور وہ مستعفی اس لیے ہو رہے ہیں کہ ملکی دفتر استغاثہ اس بارے میں مکمل غیر جانبداری کے ساتھ اپنی تحقیقات پوری کر سکے۔

Frankreich François Fillon | konservativer Präsidentschaftskandidat (Reuters/C. Hartmann)

فرانسیسی صدارتی امیدوار فرانسوا فیوں

حالیہ مہینوں کے دوران فرانس میں سیاستدانوں کی طرف سے اپنے ہی اہل خانہ کو ایسی مشکوک ملازمتیں دینے کا یہ دوسرا واقعہ ہے۔ فرانسیسی صدارتی امیدوار فرانسوا فیوں بھی اسی حوالے سے ایک بڑے اسکینڈل کی زد میں ہیں۔ انہوں نے اپنی اہلیہ کو اپنے ہی دفتر میں دکھاوے کی ایک پارلیمانی ملازمت کے بدلے ادائیگیاں کی تھیں۔

فرانسوا فیوں اپنی اس غلطی کا اعتراف کرتے ہیں لیکن اس وجہ سے صدارتی انتخابات میں اپنی امیدواری سے دستبردار ہونے پر تیار نہیں ہیں۔  مستعفی ہونے والے وزیر داخلہ برونو لی رُو کے بقول ان کا معاملہ فیوں کے اسکینڈل جیسا نہیں ہے۔

DW.COM