عمران خان نااہلی سے بچ گئے | حالات حاضرہ | DW | 15.12.2017
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

عمران خان نااہلی سے بچ گئے

پاکستانی سپریم کورٹ نے عمران خان کے بارے میں اثاثے چھپانے کی درخواست مسترد کر دی ہے۔ عدالت نے پاکستان مسلم لیگ نون کے حنیف عباسی کی درخواست کو خارج کر دیا ہے۔

پاکستان تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان کو نااہل قرار دینے کے لیے دائر درخواست کو پاکستان کی سپریم کورٹ نے مسترد کر دیا ہے۔ اسی عدالت نے پاکستان تحریک انصاف کے سیکرٹری جنرل جہانگیر ترین کو اثاثے چھپانے کے الزام کے تحت نااہل قرار دے دیا ہے۔ یہ درخواست پاکستان مسلم لیگ نون کے ایک لیڈر حنیف عباسی نے دائر کی تھی۔

سپریم کورٹ نے پاکستان تحریک انصاف کے سیکرٹری جنرل اور عمران خان کے انتہائی قریبی ساتھی کو جہانگیر ترین کو انسائڈر ٹریڈنگ کا مجرم قرار دیتے ہوئے نااہل قرار دے دیا ہے۔ اس کے علاوہ ترین کے خلاف دائر درخواست کو قابلِ سماعت بھی قرار دیا۔ اس کی تفصیلی سماعت کی تاریخ کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔

Pakistan Islamabad Urteil Korruptiosnprozess (Getty Images/AFP/A. Qureshi)

سپریم کورٹ کے چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے عدالتی فیصلہ پڑھ کر سنایا

سپریم کورٹ کے چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے عدالتی فیصلہ پڑھ کر سناتے ہوئے کہا کہ عمران خان نے ایمنسٹی اسکیم کے تحت اپنے فلیٹ کو ظاہر کر دیا تھا۔ سپریم کورٹ نے واضح کیا کہ غیر ملکی فنڈنگ کے حوالے سے حنیف عباسی متاثرہ فریق نہیں ہیں اور الیکشن کمیشن کو پابند کیا گیا ہے کہ وہ اس معاملے کی غیرجانبدار تحقیق کرے۔

 حنیف عباسی کے عمران خان اور جہانگیر ترین کے خلاف درخواستیں گزشتہ برس نومبر میں دائر کی گئی تھیں۔