1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

سائنس اور ماحول

عظیم ترین سائنسی ایجاد کون سی؟

لندن کا سائنس میوزیم انسانی تاریخ کی دس عظیم ترین ایجادات کی نمائش کر رہا ہے۔ چھبیس جون سے شروع ہونے والی اس نمائش میں لوگ اپنی پسندیدہ ترین ایجاد کے لئے ووٹ دیں گے۔

default

سن اُنیس سو بارہ میں جرمنی میں تیار کیا جانے والا تاریخی سٹیم انجن

BdT Satelitenkollision

آج کی سیٹیلائٹ دنیاجرمن وی ٹو راکٹ انجن کی مرہونِ منّت ہے

برطانوی دارالحکومت کا یہ عجائب گھر چھبیس جون سے اپنی 100 ویں سالگرہ کی تقریبات کا اہتمام کر رہا ہے۔ دس عظیم ترین ایجادات کی نمائش اِنہی تقریبات کے سلسلے کی ایک کڑی ہے۔ پہلے لوگ دَس منتخب بڑی ایجادات میں سے اپنی پسندیدہ ترین ایجاد کے حق میں ووٹ ڈالیں گے اور پھر کسی ایک ایجاد کو انسانی تاریخ کی عظیم ترین ایجاد قرار دیا جائے گا۔

لندن کے سائنس میوزیم نے جن دس ایجادات کو نمائش میں شامل کیا ہے وہ یہ ہیں: اسٹیم انجن، ایکس رے مشین، الیکٹرک ٹیلیگراف، ڈی این اے کا ڈبل ہیلکس، اسٹیفنسن کی راکٹ ٹرین، اپولو دس کا راکٹ کیپسول، ماڈل ٹی فورڈ کار اور پہلا ایس کمپیوٹر۔ ان ایجادات میں جرمنی کا وی ٹو راکٹ انجن اور پینسلین دوا بھی شامل ہیں۔

Sir Alexander Fleming, Erfinder des Penicillin

اسکاٹ لینڈ کے سر ایلکزینڈر فلیمنگ نے پینسلین کا مولڈ ایجاد کیا تھا

میوزیم کی انتظامیہ کے مطابق انہوں نے ایجادات کا انتخاب ایجادات کی انسانی تاریخ میں اہمیت اور آج کی زندگی پر ان کے اثرات کے حوالے سے کیا ہے۔

بعض افراد کے خیال میں جرمنی کا وی ٹو راکٹ انجن انسانی تاریخ کی سب سے بڑی ایجاد ہے۔ ان افراد کے مطابق اس ایجاد کے ذریعے خلاء کا سفر ممکن ہوا اور آج کی سیٹیلائٹ دنیا بھی اسی ایجاد کی مرہونِ منّت ہے، جس کے ذریعے کمیونیکیشن کا موجودہ نظام ممکن ہوا ہے۔ بعض افراد کا کہنا ہے کہ وہ پینسلین کی دوا کو سب سے بڑی ایجاد تصوّر کرتے ہیں۔

کچھ دیگر حلقوں کے خیال میں انسانی تاریخ کی سب سے بڑی ایجاد تو پہیہ ہے اور کم از کم وہ بچپن سے یہی سنتے آ رہے تھے۔