1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

عراقی پارلیمان میں اتحادی افواج کے آئندہ قیام سے متعلق قرارداد منظور

عراقی پارلیمان نے برطانیہ اور دیگر ممالک سے تعلق رکھنے والے اتحادی دستوں کے عراق میں آئندہ قیام کی قرارداد بھاری اکثریت سے منظور کر لی ہے۔

default

عراقی پارلیمان کی اس منظوری کے بعد اتحادی افواج اگلے برس تک عراق میں رہ سکتی ہے۔

عراق کے لئے اقوام متحدہ کے فوجی مشن کا مینڈیٹ 31 دسمبر تک ہی تھا۔ اس کے بعد عراق میں امریکی فوجی تو ایک دوطرفہ عسکری معاہدے کی تحت وہاں متعین رہیں گے لیکن اس مینڈیٹ کے اعتبار سے یکم جنوری سے دیگر ملکوں کے فوجی دستوں کے قیام کا کوئی قانونی جواز نہیں تھا۔

Mahmud al-Maschhadani irakischer Parlamentspräsident

مستعفی ہونے والے اسپیکر المشہدانی

پارلیمان کے خصوصی اجلاس میں پیش کی گئی اس قرارداد میں حکومت کو دیگر ملکوں سے تعلق رکھنے والے اتحادی دستوں کے عراق میں مستقبل کے حوالے سے کوئی بھی فیصلہ کرنے کا مکمل اختیار سونپ دیا گیا ہے۔

Britische Militär in der Wüste

عراق میں متعین امریکی افواج کے بعد سب سے زیادہ دستے برطانیہ کے ہیں

اس سے قبل پیرکو پارلیمنٹ کا اجلاس اسپیکر محمود المشہدانی نے اس وقت، سات جنوری تک ملتوی کر دیا تھا جب ارکان کی جانب سے اسپیکر کے مستعفی ہو جانے کے نعروں اور تند و تیز جملوں کے باعث ایوان میں ہنگامہ آرائی شروع ہو گئی تاہم امید کی جارہی تھی کہ اس معاملے پر خصوصی اجلاس بلایا جا سکتا ہے۔

Der britische Premierminister Gordon Brown bei einem Kurzbesuch in Irak

اتحادی افواج کے عراق میں قیام سے متعلق اقوام متحدہ کا مینڈیٹ 31 دسمبر تک ہے

عراقی پارلیمان کے پیر کے اجلاس سے بھی یہی توقع کی جا رہی تھی کہ عراقی پارلیمان برطانیہ، آسٹریلیا اور دیگر ملکوں سے تعلق رکھنے والے اتحادی دستوں کی اگلے سال جولائی تک عراق میں موجودگی کی منظوری دے دے گی۔

Spanische Soldaten im Irak Diwaniyah

اتحادی افواج سے متعلق عراقی پارلیمان کے اس فیصلے کی توقع پہلے سے کی جارہی تھی

اقوام متحدہ کے مطابق اتحادی افواج کے رواں سال دسمبر کی 31 تاریخ کے بعد عراق میں قیام کے لئے پارلیمان کی منظوری لازم قرار دی گئی تھی۔ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے عراق میں متعین اتحادی افواج کی تعیناتی کی مدت کی سال رواں کے اختتام پر حتمی تکمیل تصدیق بھی کر دی تھی۔

Gordon Brown besucht Iraks Vizepräsident Tariq al-Hashimi

برطانوی وزیر اعظم گورڈن براؤن نے اپنے حالیہ دورہ عراق میں اعلان کیاتھا کہ برطانوی افواج اگلے سال مئی کے آخر تک عراق میں رہیں گی۔

عراق میں متعین اتحادی افواج میں شامل امریکی دستوں کا تناسب تقریبا 95 فیصد ہے اور عراق پہلے ہی امریکی افواج کو سن 2011 کے اختتام تک قیام کی اجازت دے چکا ہے۔

پارلیمان کے منگل کے روزکئے جانے والے اس فیصلے سے امریکہ کے علاوہ دیگر اتحادی افواج کے عراق میں قیام کی ایک قانونی حیثیت مل گئی ہے۔