1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

عبالستار ایدھی کے لیے یادگاری سکہ جاری کرنے کا فیصلہ

اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی جانب سے پاکستان کے نامور فلاحی کارکن عبدالستار ایدھی مرحوم کی خدمات کے اعتراف میں ان کے نام پر پچاس روپے کا ایک خصوصی سکہ جاری کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

عبدالستار ایدھی نے لگ بھگ چھ دہائیوں قبل ’ایدھی فاؤنڈیشن ‘ قائم کی تھی، جو وقت کے ساتھ ساتھ پاکستان کی سب سے بڑی  فلاحی تنظیم بن چکی ہے۔  ایدھی طویل علالت کے بعد گزشتہ برس جولائی میں انتقال کر گئے تھے۔ اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی ویب سائٹ پر جاری پریس ریلیز کے مطابق، ’’ وفاقی حکومت نے عبدالستار ایدھی کی یاد میں  ان کے لیے ایک یادگاری سکہ جاری کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔‘‘

عبدالستار ایدھی کی یاد میں جاری کیے گئے یہ خصوصی سکے پاکستان میں اسٹیٹ بینک کے مختلف فیلڈ دفاتر سے 31 مارچ سے حاصل کیے جاسکتے ہیں۔

اس سکے کی ایک طرف  اردو زبان میں ’اسلامی جمہوریہ پاکستان‘ اور ایدھی کے وفات کا سال یعنی کے 2016 تحریر کیا گیا ہے جبکہ سکے کی دوسری جانب عبدالستار ایدھی کی تصویر کندہ ہے اور ان کی تصویر کے اوپر ’عہد انسانیت عبدالستار ایدھی‘ نمایاں طور پر لکھا گیا ہے۔

اس عظیم فلاحی کارکن  کے بارے میں تصور کیا جاتا ہے کہ انہوں نے ایدھی فاؤنڈیشن نامی تنظیم چھ دہائیوں تک کچھ ایسے چلائی کہ حکومت بھی وہ کام نہ کر سکی جو اس تنظیم نے کیا۔ ایدھی فاؤنڈیشن نے نہ صرف پاکستان بلکہ بر صغیر میں فلاحی کام کو ایک انقلابی شکل دی۔

ایدھی فاؤنڈیشن اس وقت بھی وسیع پیمانے پر ایمبولینس سروس، مفت ہسپتال، اور لاوارث بچوں، خواتین اور بوڑھوں کے لیے متعدد دارالامان چلا رہی ہے۔ پاکستان میں ایک مثال زبان زد عام رہی ہے کہ حکومت کی سروس سے پہلے ہی ایدھی کی ایمبولینسیں متاثرہ افراد تک پہنچ جاتی ہیں۔