صارفین کے ڈیٹا تک رسائی، مائیکروسافٹ کا امریکی حکومت پر مقدمہ | سائنس اور ماحول | DW | 14.04.2016
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

سائنس اور ماحول

صارفین کے ڈیٹا تک رسائی، مائیکروسافٹ کا امریکی حکومت پر مقدمہ

امریکی ادارے مائیکروسافٹ نے صارفین کے ڈیٹا تک رسائی کے معاملے پر امریکی حکومت کے خلاف ایک مقدمہ دائر کر دیا ہے۔ یہ مقدمہ ایسے صارفین کو باخبر کرنے کا حق دینے کے لیے قائم کیا گیا ہے جن کے ڈیٹا تک حکومت رسائی حاصل کرتی ہے۔

صارفین کی پرائیویسی کے معاملے پر امریکی ٹیکنالوجی اداروں اور حکومت کے درمیان کشمکش کی یہ تازہ کڑی ہے۔ خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق بدھ 13 اپریل کو یہ مقدمہ دارالحکومت واشنگٹن کے مغربی ڈسٹرکٹ میں قائم ایک وفاقی عدالت میں دائر کیا گیا۔ اس مقدمے میں دلیل پیش کی گئی ہے کہ امریکی حکومت مائیکروسافٹ کمپنی کو ایسے صارفین کو مطلع کرنے سے روک کر آئین کی خلاف ورزی کر رہی ہے، جن کے ڈیٹا تک وہ تفتیشی مقاصد کے لیے رسائی حاصل کرتی ہے۔ مائیکروسافٹ کی خواہش ہے کہ ایسے ہزاروں صارفین کو وہ اِس بات سے مطلع کرے جن کی ای میلز اور دیگر دستاویزات تک حکومتی ادارے رسائی کی درخواست کرتے ہیں۔

اس مقدمے کے مطابق ایسے حکومتی اقدامات دراصل آئین کی چوتھی ترمیم کی خلاف ورزی ہیں، جس کے مطابق لوگوں اور کاروباری اداروں کو یہ حق حاصل ہے کہ اگر حکومت ان کی پراپرٹی کی تلاشی لیتی ہے یا اسے ضبط کرتی ہے تو انہیں اس کی خبر ہونی چاہیے۔ اس کے علاوہ یہ آزادی اظہار کا حق دینے والی امریکی آئین میں پہلی ترمیم کی بھی خلاف ورزی ہے۔

Microsoft Dossier Bild 2

مائیکروسافٹ کی طرف سے دائر کردہ یہ مقدمہ دراصل صارفین کے اپنے کمپیوٹرز پر موجود ڈیٹا کی بجائے ایسے ڈیٹا تک رسائی سے متعلق ہے جو ریموٹ سرورز پر موجود ہے۔ مائیکروسافٹ کے مطابق حکومت کے لیے ایسے الیکٹرانک ڈیٹا تک رسائی سے تفتیش کا ایک نیا راستہ کُھل گیا ہے۔

مائیکروسافٹ کے مطابق حکومت کی طرف سے گزشتہ 18 ماہ کے دوران صارفین کے ڈیٹا تک رسائی کے 5,624 احکامات موصول ہوئے جن میں سے 2,576 کیسز میں مائیکروسافٹ کو اس بات سے روک دیا گیا کہ وہ مطلوبہ صارفین کو اس بات سے باخبر کر سکتی کہ حکومت کی طرف سے ان صارفین کے ڈیٹا تک رسائی کی درخواست کی گئی ہے۔ مائیکروسافٹ کے مطابق ایسے زیادہ تر احکامات کمپنیوں کی بجائے انفرادی لوگوں کے بارے میں ہیں۔ اس کے علاوہ اس بات کا کوئی وقت بھی مقرر نہیں کیا گیا جس کے بعد مائیکروسافٹ اپنے ایسے صارفین کو مطلع کر سکتی ہو۔

مائیکروسافٹ اور دیگر کمپنیوں نے دو برس قبل یہ حق حاصل کیا تھا کہ وہ حکومت کی طرف سے ڈیٹا تک رسائی فراہم کرنے کے لیے کی جانے والی درخواستوں کی کُل تعداد کو عام کر سکتی ہیں۔ گزشتہ روز دائر کیے جانے والے مقدمے میں اب اس بات کا حق حاصل کرنے کی بات کی گئی ہے کہ ایسے لوگوں اور کاروباری اداروں کو باقاعدہ مطلع بھی کیا جا سکے کہ حکومت ان کی معلومات تک رسائی حاصل کرنا چاہتی ہے۔